.

سعودی ثقافت اور شاعری اکیڈمی میں انٹرایکٹو پروگرام کے لیے معاہدہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی وزارت ثقافت اور طائف یونیورسٹی میں عربی شاعری کی اکیڈمی نے موسیقی کے شعبے کو ترقی دینے کے علاوہ ادب ، اشاعت اور ترجمے کے شعبے کوترقی دینے اورعربی شاعری کو سپورٹ کرنےکے ایک معاہدے پر دستخط کیا ہے۔ یہ سرگرمی انٹرایکٹو شاعرانہ ماحول پیدا کرے گی جو ابھرتی ہوئی شاعرانہ مہارت کو فروغ دینے میں مدد دے گی۔ یہ پروگرام سعودی عرب میں ثقافتی مواد کے لیے کئی انٹرایکٹو اور افزودگی پروگراموں کا حصہ ہے۔

فریقین کے درمیان کل بُدھ کو دوطرفہ تعاون کے معاہدے کی منظوری دی گئی۔ جس پر دستخط کے دوران خادم الحرمین الشریفین مشیر، مکہ کےگونراورعربی شاعری اکیڈمیی کے بورڈ آف ٹرسٹیز کے چیئرمین شہزادہ خالد الفیصل بھی موجود تھے۔

معاہدے کی دستاویز پر نائب وزیر ثقافت حامد فائز اورعربی شاعری اکیڈمی کے بورڈ آف ٹرسٹیز کے سیکرٹری ، طائف یونیورسٹی کے صدر ڈاکٹر یوسف عسیری نے دستخط کیے۔ اس معاہدے کے نتیجے میں کئی ثقافتی سرگرمیوں، سعودی شاعری فورم اور مختلف ادبی پروگرام جو سعودی عرب میں ثقافتی منظر کو تقویت بخشنے میں معاون ہیں کو فروغ دینے میں مدد ملے گی۔اس کے علاوہ اس معاہدے سےابتدائی تربیت، کلاسیکی شاعری اور موسیقی کے میدان میں دلچسپی رکھنے والوں کے لیے موسیقی کی تربیت ، نیز فنکارانہ کیریئر کو مکمل کرنے کے لیے صلاحیتوں کو فروغ دینا ہے۔

نائب وزیر ثقافت نے عربی شاعری کی اکیڈمی کے ساتھ اس تعاون پر فخر کا اظہار کیا۔ وزیر ثقافت نے اس خواہش پر زوردیا کہ وہ سعودی ثقافتی منظر کام کرنے والے تمام فعال اداروں کے ساتھ تعاون کو فروغ دیں گے۔ جس میں عربی شاعری اکیڈمی ایک معزز کے طور پر شامل ہے۔