.

شام: ترکی کی فوجی گاڑی کے نزدیک دھماکا، 2 فوجی ہلاک اور 4 زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے صوبے ادلب کے شمال میں ترک فوج کی ایک گاڑی کے نزدیک دھماکا خیز مواد پھٹنے سے 6 فوجی ہلاک و زخمی ہو گئے۔ زخمیوں کو فوری طور پر ایمبولینس کے ذریعے باب الہوی کی سرحدی گزر گاہ تک پہنچایا گیا۔ وہاں سے فوجی ہیلی کاپٹر کے ذریعے زخمیوں کو ترکی کے ہسپتال پہنچایا گیا۔

ترکی کی فوج نے حلب اور لاذقیہ کے درمیان ہائی وے اور اس کے ذیلی راستوں پر میرینز دستوں کا گشت جاری رکھا ہوا ہے۔ اس کا مقصد اُن بارودی سرنگوں کو تلاش کرنا ہے جو نا معلوم افراد کی جانب سے ترکی کے فوجی قافلوں کو نشانہ بنانے کے واسطے نصب کی جاتی ہیں۔

ترکی کی فوج کو نا معلوم عناصر کی جانب سے دھماکا خیز مواد اور آر پی جی گرینیڈز کے علاوہ برہ راست بھی نشانہ بنایا جاتا ہے۔ ترکی کی فوج نے حلب اور لاذقیہ کے بیچ ہائی وے M4 پر سیکورٹی کیمرے نصب کر رکھے ہیں۔

نا معلوم مسلح افراد نے آج ہفتے کو علی الصبح ادلب کے جنوب میں واقع قصبے بلیون میں ترکی کی فوج کے ایک اڈے کو آر پی جی گرینیڈز کے ذریعے نشانہ بنایا۔ تاہم حملے میں کوئی زخمی نہیں ہوا۔