.

گھرکے درو دیوارکوحرمین کی تصاویرسے مزین کرنےوالے سعودی سے ملیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں ایک مقامی فوٹو گرافر نے گذشتہ پندرہ سال کے دوران حرم شریف کے ایمان پرور مناظرکوکیمرے میں محفوظ کرکے ان تصاویر سے اپنے گھر کو مزین کرکے ایک منفرد مثال قائم کی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے فوٹو گرافر نے بتایا کہ اس نے حرم شریف کی پندرہ ہزار سے زاید تصاویرلیں۔پندرہ سال کے دوران لی جانے والی ان تصاویر مسجد حرام، خانہ کعبہ اور مسجد نبوی کے مناظر شامل ہیں۔

فوٹو گرافر بندر ادریس صغیر نے حرمین شریفین کی گیلریوں، مقدس مقامات کے صحنوں، ان کی دیواروں، ستونوں اور ان مقدس عمارتوں کی شان شوکت کے مناظر پرمبنی ہزاروں تصاویر لیں۔ وہ گذشتہ پندرہ سال سے حرمین شریفین کی تصاویر لے رہا ہے۔ اب یہ تصاویر اس کے اپنے دولت خانے کی زینت ہیں۔

فوٹوگرافر "بندر ادریس صغیر" نے بتایا کہ 1415 ہجری سے فوٹو گرافی شروع کی۔ اس وقت وہ فضائی فوٹوگرافی کے فن میں مہارت نہیں رکھتا تھا تاہم فوٹو گرافی کے کورسزمیں مشق کے ذریعےاس نے اپنی صلاحیتوں کو پروان چڑھایا۔ اس کی تصویری سرگرمیوں کا عرصہ ربع صدی پر محیط ہے اور اس دوران اس نے حرم شریف کی پندرہ ہزار تصاویراپنے کیمرے میں محفوظ کرنے کے بعد انہیں اپنے گھر کے درو دیوار کی زینت بنایا۔

اس نے بتایا کہ میں نے حرمین شریفین کیمروں کے ذریعے لی گئی تصاویر کو اپنے گھر کی زینت بنایا اور گھر کو ایک کھلی نمائش میں منتقل کردیا ہے۔ اس نے اپنے گھر کی نمائش کو’زمین کا مقدس مقام‘ کا عنوان دیا ہے۔

اس نے مزید کہا کہ میں نے شاہ فہد کی توسیع سمیت کئی توسیعی منصوبوں کے دوران ہونے والے کام، توسیعی منصوبوں سے قبل اور بعد کے مناظر کو بھی محفوظ کرچکا ہوں۔ مسجد حرام کی تصاویرکے حصول کے لیے اس نے شاہ عبداللہ توسیعی منصوبے کےآغاز سے لے کر اب تک مسجد حرام میں توسیع کی تصاویر کی شکل میں محفوظ کیا۔ ان تصاویر میں آرکیٹیکچرل ڈیزائن ، حجر اسود ، مقام سیدنا ابراہیم، سنہری دروازہ کی تصاویر شامل ہیں جن کا مقصد حرم شریف کی روحانیت کو دنیا تک منتقل کرنا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے فوٹو گرافر صغیر نےبتایا کہ پچھلے رمضان میں اس نے افطاری کے وقت مسجد حرام اور کعبہ شریف کی پانچ ہزار فٹ کی بلندی سے تصویر لی۔ تصاویر میں مکہ گھڑیال کے ہلال اور کعبہ شریف کی تصاویر کو بڑے پیمانے پر سراہا گیا ہے۔