.

عرب ریڈنگ چیلنج میں سعودی طالبہ کی تیسری پوزیشن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی طالبہ شہد بنت ضیاء آل قیصوم نے "عرب ریڈنگ چیلنج 2021" کے مقابلے میں تیسری پوزیشن حاصل کر لی۔ یہ مقابلے کا پانچواں ایڈیشن تھا اور حتمی مرحلے کے لیے پانچ امیدواروں نے کوالیفائی کیا۔ سعودی طالبہ نے اپنا انعام ایک تقریب میں حاصل کیا۔ یہ تقریب دبئی کے حاکم اور متحدہ عرب امارات کے نائن صدر اور وزیر اعظم کے زیر سرپرستی اوپیرا ہاؤس دبئی میں منعقد ہوئی۔

شہد سعودی عرب کے مشرقی ضلعے القطیف میں ایک ہائی اسکول میں بارہویں جماعت کی طالبہ ہے۔ شہد کی اس کامیابی پر سعودی وزارت تعلیم نے اپنے سرکاری ٹویٹ اکاؤنٹ کے ذریعے شہد کو تہنیتی پیغام دیا۔ مذکورہ ریڈنگ چیلنج میں 52 عرب اور غیر عرب ممالک کے 2.1 کروڑ طلبہ و طالبات نے حصہ لیا۔ مقالے میں 96 ہزار اسکول شریک تھے۔ مقابلے کی نگرانی 1.2 لاکھ افراد نے انجام دی۔

شہد
شہد

حتمی مرحلے میں پہنچنے والے طلبہ و طالبات کے نام یہ ہیں : سارة بنت احمد الضعيف (مراکش)، عبدالله بن محمد ابو خلف (اردن)، عبد الرحمن بن منصور عبد المقصود (مصر)، يسرا بنت محمد الامام (سوڈان) اور شهد بنت ضياء آل قيصوم (سعودی عرب)۔

یاد رہے کہ عرب ریڈنگ چیلنج کا آغاز 2015ء میں ہوا تھا۔ یہ مقابلہ 'محمد بن راشد آل مکتوم عالمی منصوبوں' کی ایک کڑی ہے۔ اس کا مقصد عربی زبان کی اہمیت اجاگر کرنا، عرب طلبہ میں مطالعے کی عادت کو پھر سے زندہ کرنا اور ہر طالب اور طالبہ کو ہر تعلیمی سال کے دوران میں 50 کتابوں کے مطالعے کا پابند بنا کر ایک دانش ور نسل تیار کرنا ہے۔

سعودی عرب میں القطیف ضلع میں محکمہ تعلیم کے سربراہ نے شہد آل قیصوم کی کامیابی پر اسے اور اس کی استانیوں کو مبارک باد پیش کی ہے۔