.

ایران سے بھاری اسلحہ وینزویلا منتقل ، 500 کلو گرام وزنی بم بھی شامل: رپورٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران بھرپور انداز سے وینزویلا کو مسلح کر رہا ہے۔ یہ بات کولمبیا کے ایک ہفتہ وار جریدے Semana کی رپورٹ میں دستاویزی حوالوں کے ساتھ بتائی گئی ہے۔ رپورٹ کے مطابق یہ سلسلہ ایران کی ایک فضائی کمپنی "فارس اير قشم" کے ایک بوئنگ 747 طیارے کے وینزویلا میں سب سے بڑے فوجی اڈے پر اترنے کے ساتھ شروع ہوا۔ اس اڈے کا نامEl Libertador ہے اور یہ کیریبین کے ساحل پر وینزویلا کے انتہائی شمال میں واقع ہے۔

اس طیارے کے ذریعے 2000 میزائل ، 400 بم ، 30 کینن لانچرز ، 35 ریڈار اور ہزاروں بندوقیں اور کلاشنکوفیں وینزویلا پہنچائی گئیں۔ اس آپریشن کوEscudo Boliviano 2021 کا نام دیا گیا ہے۔

وینزویلا پہنچائے گئے ہتھیاروں میںZAB اور RBK طرز کے بم شامل ہیں۔ ان میں ایک بم کا وزن 500 کلو گرام ہے۔ علاوہ ازیں کھیپ میں بحری جہاز شکن میزائلوں کے علاوہ زمین سے فضا ، فضا سے فضا اور طیارہ شکن میزائل شامل ہیں۔

جریدے کی رپورٹ کے مطابق وینزویلا کی وزارت دفاع کے دفتر کے ڈائریکٹر جنرل ،،، جنرلGerson Enrique Labrador نے ہی 3 دساویزات پر مبنی ایک رپورٹ لکھی۔ اس رپورٹ میں انہوں نے ان ہتھیاروں اور اسلحے کی تفصیلات درج کی ہیں جن کی منتقلی کا مطالبہ کیا گیا۔

جریدے نے اپنی رپورٹ میں اس بات کی تصدیق کی ہے کہ وینزویلا بھیجے جانے والے ہتھیاروں کو چلانے کی تربیت دینے والے پیشہ ورانہ تربیت کار اور ایرانی انٹیلی جنس کے اہل کار بھی ساتھ پہنچے ہیں۔ اسی دوران میں وینزویلا کی مسلح افواج کے عناصر کو دفاعی اور تزویراتی کورسز کے ذریعے تربیت کے لیے اس ملک (ایران) بھیجا گیا۔