.

پناہ گزینوں کی مشکلات کم کرنے کے لیے سعودی عرب کی کوششوں کی عالمی سطح پر ستائش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی ڈیولپمنٹ فنڈ کے چیف ایگزیکٹو سلطان المرشد نے کل پیر کے روز اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے پناہ گزین فلیپو گرانڈی سے ملاقات کی۔

جنیوا میں ہائی کمیشن کے دفتر میں ہونے والی اس ملاقات میں علاقائی اور عالمی صورت حال میں اہم پیش رفت اور نقل مکانی سے متعلق عالمی رجحانات پر بات چیت ہوئی۔ دونوں شخصیات نے آئندہ مرحلے میں کرونا کی وبا کے جلو میں انسانی ضروریات پوری کرنے کے سلسلے میں جانبین کے درمیان تعاون مضبوط بنانے کے طریقہ کار پر بھی تبادلہ خیال کیا۔ یہ ملاقات جانبین کے درمیان مشترکہ تعاون کے 10 برس گزرنے کے موقع پر ہوئی۔

اس موقع پر گرانڈی نے فلاحی اور انسانی کاموں کے میدان میں سعودی عرب اور اس کی انسانی تنظیموں کے کردار کو سراہا۔ گرانڈی نے تزویراتی شراکت داری کے حوالے سے انتہائی ممنونیت کا اظہار کیا۔

سعودی ڈیولپمنٹ فنڈ کے چیف ایگزیکٹو سلطان المرشد نے انسانی معاملات کی خدمت کے مقصد سے ہائی کمیشن کے منصوبوں کے مفاد میں سعودی عرب کی کوششوں پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے باور کرایا کہ پناہ گزینوں کے ہائی کمیشن اور سعودی فنڈ کے درمیان مشترکہ تعلق بڑا گہرا ہے۔ اس کا مقصد انسانی پناہ کے حالات کو درپیش مصائب میں کمی لانا ہے۔ المرشد کے مطابق گذشتہ 10 برسوں کے دوران میں 17 پروگراموں پر عمل درامد کیا گیا جن کی مالیت 7.8 کروڑ ڈالر تھی۔ ان پروگراموں سے دنیا کے 7 ممالک میں 50 لاکھ سے زیادہ افراد مستفید ہوئے۔

سعودی عہدے دار نے مزید کہا کہ انسانی سپورٹ کے شعبے میں سعودی عرب ایک بھرپور ریکارڈ رکھتا ہے۔ اس حوالے سے افغانستان، پاکستان، میانمار، تھائی لینڈ، بنگلہ دیش، شام، لبنان اور اردن میں انسانی ترقیاتی میدانوں میں متعدد پروگراموں کو سعودی فنڈ کے ذریعے سپورٹ کیا گیا۔