.

اسرائیل کے ساتھ تعاون کا الزام، حماس نے دو افراد کو سزائے موت سنا دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطین کی مزاحمتی تنظیم اسلامی تحریک مزاحمت [حماس] کے زیر نگیں غزہ کی پٹی کے علاقے میں تنظیم کی قائم کردہ ایک فوجی عدالت نے اسرائیل کے ساتھ تعاون کرنے کے الزام میں دو افراد کو سزائے موت سنا دی ہے۔

غزہ سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق ملزموں کی عمریں تینتالیس اور تیس برس بتائی گئی ہیں۔ ان دونوں پر الزام تھا کہ انہوں نے انتہائی حساس اور درست معلومات اسرائیل کو فراہم کیں، جن کے نتیجے میں حماس کے جنگجو شہید ہوئے تھے۔

حماس کی جانب سے آخری مرتبہ سن دو ہزار سولہ میں ایک ملزم کو سزائے موت دی گئی تھی۔ دوسری جانب فلسطینی سینٹر فار ہیومن رائٹس نے اس فیصلے کی مذمت کی ہے۔