.

الریاض سیزن: WWE کے ریسلنگ رنگ میں آنے والی چار سعودی خواتین کی کہانی کیا ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

چھاتی کے کینسر سے آگاہی کے مہینے کے ساتھ جس کا اظہار 2021 ریاض سیزن کے ایک حصے کے طور پر WWE ورلڈ پروفیشنل ریسلنگ ایونٹ میں بھی دیکھا گیا میں چار سعودی خواتین نے بھی شرکت کی۔ ان خواتین نے اگرچہ ریسلنگ کے میدان میں تو کارنامے انجام نہیں دیے البتہ انہوں نے کینسر جیسے موذی مرض کو شکست دے کر اس پر فتح حاصل کی تھی۔ ریسلنگ رنگ میں ان کی آمد انسداد کینسر کے لیے مملکت کی مساعی کی عکاسی ہے۔

الریاض سیزن میں WWE [ورلڈ ریسلنگ انٹرٹیمنٹ] کے زیراہتمام ہونے والے ایک ایونٹ کی ویڈیو میں چارخواتین کے ریسلنگ رنگ میں آنے کے منظر کی عکس بندی کی گئی ہے۔ ان چاروں خواتین نے WWE کی بیلٹ پرلگا رکھی ہیں اور دوسری طرف شائقین تالیاں بجا کران کا استقبال کر رہے ہیں۔

پنک اکتوبر

یہ امر قابل ذکر ہے کہ اکتوبر کے مہینے کو چھاتی کے کینسر سے آگاہی کے مہینے کےطورپر منایا جاتا ہے۔ اسے "گلابی اکتوبر" یا پنک اکتوبر کہا جاتا ہے۔ سعودی عرب میں چھاتی کا کینسر 40 سال اور اس سے زیادہ عمر کی خواتین میں زیادہ عام ہے۔چھاتی کے کینسر کے 50 فیصد سے زیادہ کیسزسعودی عرب میں 20 فیصد کے مقابلے میں اعلی درجے کے مراحل میں پائے جاتے ہیں۔ اس سے شرح اموات میں اضافہ ہوتا ہے اور صحت یابی کے امکانات کم ہوتے ہیں اور ساتھ ہی علاج بھی بہت مہنگا ہوتا ہے۔

اس کے علاوہ میموگرافی کے ذریعے چھاتی کے کینسر کی ابتدائی شناخت ، علاج اور بقا کی شرح میں نمایاں اضافہ یکھا گیا ہے۔