.
سعودی معیشت

سعودی عرب:2030 تک برقی کاروں کا تناسب 30 فی صد کرنے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے اعلان کیا ہے کہ وہ 2030 تک ریاض میں کم از کم 30 فیصد برقی کاروں کی اجازت دے گا۔اس کا مقصد گرین ہاؤس کے اخراج کو کم کرنے کی کوشش کرنا ہے۔

ریاض شہرکے رائل کمیشن کے سربراہ فہد الرشید نے انکشاف کیا کہ ہفتہ کو سعودی ماحولیاتی کانفرنس کے آغاز پراعلان کیا گیا اگلے 9 سال کے دوران 8 ملین آبادی والےالریاض شہرمیں کاربن کے اخراج کو نصف کرنے کا منصوبہ ہے۔

اسی دن ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے 2060 تک سعودی عرب کے اندر گلوبل وارمنگ کے اخراج کو ختم کرنے کا وعدہ کیا۔

ریاض میں برقی گاڑیوں کو فروغ دینے کا ہدف اس وقت سامنے آیا ہے جب مزید ممالک پٹرول اور ڈیزل سے چلنے والے اندرونی انجنوں کو کم کرنے یا ختم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ چین نے 2025 تک نئی کاروں کی فروخت کا 25 فیصد برقی کرنے کا عزم کیا ہے۔ ریاض میں 2030 تک جیواشم ایندھن سے چلنے والی نئی برقی کاریں متعارف کرائی جائیں گی۔

الرشید نے بتایا کہ پبلک انویسٹمنٹ فنڈ کئی سالوں سے الیکٹرک گاڑیوں میں سرمایہ کاری کر رہا ہے۔