.

سنگین ماحولیاتی خطرات باور کرانے کے لیے "سبز مشرق وسطی" اہم قدم ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تعلیم ، سائنس اور ثقافت سے متعلق اسلامی دنیا کی تنظیم ICESCO نے "سبز مشرق وسطیٰ" منصوبے کے سلسلے میں پہلے سربراہ اجلاس کے نتائج کا خیر مقدم کیا ہے۔ یہ اجلاس سعودی دارالحکومت ریاض میں منعقد ہوا۔ اس کا مقصد ماحولیاتی تبدیلی کے چیلنجوں کا مقابلہ کرنے ، مشرق وسطی میں اس صورت حال کے انسداد کے واسطے پہلا اتحاد تشکیل دینے اور اس میدان میں عالمی برادری کی کوششوں کو سپورٹ کرنے کے لیے سعودی عرب اور عالمی برادری کے بیچ تعاون مضبوط بنانا ہے۔

مذکورہ تنظیم کی جانب سے جاری بیان میں اجلاس میں کیے گئے فیصلوں کو گراں قدر قرار دیا گیا۔ یہ فیصلے دنیا کو ماحولیاتی تبدیلی کے خطرات کی سنگینی باور کرانے کی راہ میں فیصلہ کن اقدام شمار ہو رہے ہیں۔ اس پر عمل درامد کے واسطے غیر معمولی نوعیت کے عملی رجحان کا اظہار ہو رہا ہے جس کی مثال اس سے قبل نہیں ملتی۔

تنظیم نے اپنے بیان میں سبز مشرق وسطی اور سبز سعودی عرب کے منصوبوں کو بھرپور طور سے سراہا۔ سعودی ولی عہد اس سلسلے میں خطے میں 50 ارب درختوں کی شجر کاری کا اعلان کر چکے ہیں۔ یہ دنیا بھر میں شجر کاری کے اعادے کے واسطے اپنی نوعیت کا سب سے بڑا پروگرام ہے۔ اس کے ذریعے عالمی سطح پر کاربن کے اخراج میں 10% سے زیادہ کی کمی واقع ہو گی۔

اسلامی دنیا کی تنظیم ICESCO نے باور کرایا ہے کہ وہ ان قائدانہ منصوبوں کے مطلوبہ نتائج کو یقینی بنانے کے لیے سعودی عرب اور دنیا کے دیگر ممالک میں متعلقہ اداروں کے ساتھ مستقل تعاون کے واسطے تیار ہے۔