.

الریاض سیزن میں دنیا کا مہنگا ترین ماسک 1.5 ملین ڈالرفروخت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کرونا وائرس سے بچاؤ کے لیے ہیروں سے جڑا ماسک 15 لاکھ ڈالر میں فروخت ہوا جسے ایک بین الاقوامی کمپنی نے ریاض سیزن 2021 میں زیورات کی منفرد نمائش میں پیش کیا تھا۔

18 قیراط سفید سونے کا بنا ، سفید اور سیاہ رنگ کے 3608 ہیروں سے جُڑا ہوا اور سونے سے بنا یہ ماسک سجاوٹ کے لیے نہیں۔

مہنگا ہونے کے ساتھ ساتھ یہ ماسک طبی طور پر کرونا وبا سے بچاؤ کے لیے تیار کردہ ماسک کے مطابق اور موزوں ہے کرونا کے انفیکشن کو روکنے میں مدد کرتا ہے۔ مینوفیکچرر کے مطابق یہ ماسک صحت کے تقاضوں کے مطابق ہے اور اسے یو ایس فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن نے منظور کیا ہے اور اس پر N-99 ایئر فلٹر لگایا جا سکتا ہے۔

بزنس جریدے فوربز میگزین کے مطابق ایک ڈیزائنر اور 25 جیولرز کی شرکت کے ساتھ اس ماسک کی تیاری میں 9 ماہ لگے۔ یہ امریکا میں مقیم ایک چینی تاجر نے بنوایا جو ماسک کی دنیا میں اب تک کا سب سے مہنگا ماسک ہے۔

ماسک کے ڈیزائنر نے کہا کہ پیسے سے ہر چیز نہیں خریدی جا سکتی لیکن اگر وہ کووِڈ 19 سے بچاؤ کے لیے مہنگا ماسک خرید سکتا ہے اور یہ آدمی اسے پہن کر توجہ مبذول کروانے کے لیے اس کے ساتھ گھومنا چاہتا ہے۔ تو اسے کے لیے خوشی کی بات ہے۔