.

الیکٹرانک انوائسنگ کا سعودی عرب میں تجارتی کورکے کنٹرول میں کیا کردارا ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں سینٹر فار کمیونیکیشن اینڈ فنانشل نالج "متمم" نے زکوٰۃ، ٹیکس اور کسٹمز اتھارٹی کے تعاون سے "الیکٹرانک بلنگ اور پرائیویٹ سیکٹر کو بااختیار بنانے" پر ایک بحث کا انعقاد کیا ہے جو کہ مرکز کی طرف سے منعقد کی جانے والی ورچوئل میٹنگوں کے تسلسل کا حصہ ہے۔

زکوٰۃ، ٹیکس اور کسٹم اتھارٹی میں حکمت عملی اور ترقی کے نائب گورنر اور الیکٹرانک بلنگ پروجیکٹ کے ڈپٹی ڈائریکٹر عبداللہ الفنتوخ نے کہا کہ الیکٹرانک اور کاغذی رسید کے درمیان فرق کا خلاصہ یہ ہے کہ یہ روایتی طریقہ کار کو بدل دےگا ہے۔ایک مربوط الیکٹرانک عمل میں انوائس جاری کی جائے گی جو ڈیٹا پروسیسنگ اور ایک منظم انداز میں تبادلے کی اجازت دیتا ہے۔

الفنتوخ نے نشاندہی کی کہ الیکٹرانک انوائسنگ ایک قومی منصوبہ ہے جو تجارتی ٹیکس چھپانے کی روک تھام میں مدد کرتا ہے اور فروخت کندگان کے درمیان منصفانہ مسابقت کو بڑھاتا ہے۔ یہ کچھ دوسروں کے تعاون سے ہی کامیاب ہو سکتا ہے۔

الیکٹرانک انوائسنگ پروجیکٹ کو دو مرحلوں میں تقسیم کرنے کے مقصد کے حوالے سے الفنتوخ نے کہا کہ اس کی وجہ ٹیکس دہندگان کو سہولت فراہم کرنا ہے۔