سعودی عرب : معدومیت کا شکار جانوروں کی تجارت پر دو شہری زیر حراست

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب میں ماحولیاتی امن سے متعلق اسپیشل فورس نے دو شہریوں کو استغاثہ کے سامنے پیش کیا ہے۔ ان دونوں سعودیوں پر ماحولیاتی نظام اور قوانین کی خلاف ورزی کا الزام ہے۔ جدہ ضلع کے ان دونوں افراد نے معدومیت کے خطرے سے دوچار جانوروں کی اقسام کی تجارت کی۔ ان جانوروں میں 7 شیر، 3 بجّو، 2 بھیڑیے، 2 لومڑیاں اور ایک چیتا شامل ہے۔

ماحولیاتی امن سے متعلق اسپیشل فورس کے ترجمان میجر رائد المالکی نے واضح کیا کہ معدومیت کے خطرے سے دوچار جانوروں کی فروخت کی سزا 3 کروڑ ریال جرمانے اور دس سال قید یا دونوں میں سے کوئی ایک سزا ہے۔

ترجمان نے تمام لوگوں پر زور دیا کہ وہ ماحولیات یا جنگلی حیات پر کسی بھی صورت میں کسی قسم کی زیادتی کا ارتکاب دیکھیں تو اس کی فوری طور پر اطلاع پہنچائیں۔

یاد رہے کہ مملکت میں جاری سرکاری فرمان میں شکاری درندوں کی تمام اقسام کی ذاتی یا تجارتی مقصد سے درآمد کو پہلے ہی ممنوع قرار دیا جا چکا ہے۔

شکاری درندوں کے لیے لائسنس نہ ہونے کے پیش نظر سعودی عرب میں نجی فارمز اور گھروں میں پائے جانے والے ان جانوروں کی تعداد کا ابھی تک تعین نہیں کیا جا سکا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں