متحدہ عرب امارات لبنانیوں کوملک کے سفرسے نہیں روکے گا:انورقرقاش

ہم ایساکوئی کام نہیں کریں گے جس سے لبنانیوں کو ذاتی حیثیت میں بہ طورشہری نقصان پہنچے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات کے ایک سینیرعہدہ دار نے واضح کیا ہے کہ بیروت اورخلیجی عرب ریاستوں کے درمیان سفارتی تنازع میں لبنانیوں کو ملک کا سفر کرنے سے نہیں روکا جائے گا۔

متحدہ عرب امارات کے صدر کے سفارتی مشیرانورقرقاش نے صحافیوں کو بتایا کہ ان کا ملک لبنان کی انسانی بنیاد پرحمایت جاری رکھے گا اور وہ نہیں چاہتا کہ لبنانی شہریوں کو ملک کے سیاسی اور معاشی بحران کی وجہ سے زیادہ نقصان اٹھانا پڑے۔

لبنان کو خلیجی عرب ریاستوں کے ساتھ اس وقت بدتر سفارتی بحران کا سامنا ہے۔اس کا آغاز یمن میں عرب اتحاد کی فوجی مہم کے بارے میں ایک لبنانی وزیر کے تنقیدی تبصروں سے ہوا تھا۔اس کے ردعمل میں سعودی عرب، بحرین اور کویت نے لبنان کے اعلیٰ سفارت کاروں کو بے دخل کردیا تھا اور بیروت سے اپنے سفیروں کو واپس بلا لیا تھا۔یواے ای نے بھی اپنے سفیر کوواپس بلا لیا تھا۔

انورقرقاش نے اس صورت حال کے تناظرمیں کہا کہ ہم ایسا کوئی کام نہیں کریں گے جس سے لبنانیوں کو ذاتی حیثیت میں بہ طور شہری نقصان پہنچے۔ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ یواے ای کا سفر کرنے کے قابل لبنانیوں پرسفارتی اقدامات کا کوئی اثر نہیں پڑے گا۔

لبنان کی تباہ شدہ معیشت کے لیے سب سے بڑی تشویش سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات میں کام کرنے والے لاکھوں لبنانیوں کومتاثر کرنے والے اقدامات ہوسکتے ہیں۔اس طرح معاشی بحران سے دوچارلبنان میں بیرون ملک سے رقوم کی ترسیل متاثر ہوسکتی ہے۔

انھوں نے کہا کہ ’’ہم نے طویل عرصے تک لبنان کے ساتھ غیر رسمی بات چیت کی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ لبنان خلیج کے ساتھ تعلقات بگاڑتا ہے تو یہ اس کے لیے نقصان دہ ہوگا لیکن ان پیغامات میں سے کسی پر کان نہیں دھرا گیا اور جب لبنان میں بحران آیا تواسے عربوں کی کوئی حمایت حاصل نہیں تھی۔‘‘

سعودی عرب اوراس کی اتحادی خلیجی عرب بادشاہتوں نے ماضی میں لبنان کواربوں ڈالرکی امداد مہیا کی ہے اور اب بھی لبنان کے بیشترباشندوں کو ان ممالک میں ملازمتیں اور پناہ گاہیں فراہم کی جاتی ہیں لیکن لبنان کی طاقتور ایران کی حمایت یافتہ شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے بڑھتے ہوئے اثرو رسوخ کی وجہ سے یہ دوستی برسوں سے کشیدگی کا شکار ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں