ماکر الشیاہین: سعودی عرب میں نایاب بازوں کے شکار کے لیے مشہور ترین غار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب میں مدینہ منورہ کے شمال میں واقع ضلع خیبر میں "ماکر الشیاہین" کا غار واقع ہے۔ پرانے وقتوں میں بازوں کے شکار کے شوقین حضرات اس غار کو نادر و نایاب نوعیت کے بازوں کے شکار کا مقام شمار کرتے تھے۔

خیبر ضلع کے تاریخی ورثے میں دل چسپی رکھنے والے محقق عیسی الرشیدی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ "ماکر الشیاہین کا غار تین کلو میٹر تک پھیلا ہوا ہے۔ اس کی چوڑائی 18 میٹر ہے۔ اس کا نام ماکر الشیاہین ہونے کی وجہ یہ ہے کہ اس غار کے بالائی حصے میں ایک دہانہ ہے جہاں باز کثرت سے اپنا ٹھکانہ بناتے ہیں"۔

الرشیدی کے مطابق یہ غار آتش فشانوں کے پھٹنے کے نتیجے میں وجود میں آیا۔ علاقے میں آخری بار آتش فشاں تقریبا 400 سال قبل پھٹا تھا۔ یہ غار سنگِ سیاہ (بسالٹ) کا بنا ہوا ہے جس کا ڈھے جانا دشوار ہوتا ہے۔ اس غار کی سرکاری طور پر توثیق 2018ء کے آغاز میں ہوئی۔ ماکر الشیاہین کا غار علاقے میں موجود دس سے زیادہ غاروں میں سے ایک ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں