کرونا وائرس

سعودی عرب: بازاروں میں داخلے کے لیے بوسٹر خوراک کی شرط کب سے لاگو ہوگی؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کی وزارت تجارت نے مائیکرو بلاگنگ سائٹ ’ٹوئٹر‘ پر اپنے آفیشل اکاؤنٹ کے ذریعے ایک انفوگرافک شائع کیا ہےجس میں یہ انکشاف کیا گیا کہ کرونا وائرس (کووڈ 19) کی بوسٹر خوراک کو بازاروں میں داخلے کے لیے بنیادی شرط قرار دیا جا رہا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہےکہ یکم فروری 2022ء سے مملکت بھر میں تجارتی مرکز اور بازاروں میں داخلے کے لیے بوسٹر خوراک کو لازمی قرار دیا گیا ہے۔

وزارت تجارت نے کہا ہے کہ اس فیصلے میں 18 سال یا اس سے زیادہ عمر کے گروپ شامل ہیں۔ وہ تمام لوگ جنہیں دوسری خوراک لینے کے بعد سے 8 ماہ یا اس سے زیادہ وقت گذرچکا ہے وہ افراد جو "توکلنا" ایپلی کیشن پر رجسٹریشن کے مطابق ویکسین لینے سے مستثنیٰ ہیں وہ شامل نہیں ہوں گے۔

وزارت تجارت نے تمام تجارتی اداروں، بازاروں اور مالز سے کہا کہ وہ کسی بھی خلاف ورزی کی نشاندہی کریں اور خلاف ورزی کرنے والوں کو سخت سزائیں دی جائیں۔

حال ہی میں وزارت داخلہ نے تصدیق کی ہے کہ یکم فروری 2022 سے "توکلنا" ایپ میں محفوظ حیثیت کی ظاہری شکل ان لوگوں کے لیے ہوگی جو صرف تیسری " بوسٹر" خوراک لے چکے ہوں۔ تیسری خوراک کسی بھی معاشی، تجارتی، ثقافتی، کھیل یا سیاحتی سرگرمی اور کسی ثقافتی، سائنسی، سماجی یا تفریحی تقریب میں داخل ہونے کے لیے بنیادی شرط ہوگی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں