بحرین نے بیروت میں’دشمن اہلکاروں‘کی پریس کانفرنس کی میزبانی پرلبنان کی مذمت کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بحرین کی وزارتِ خارجہ نے دہشت گردی کی فہرست میں شامل افراد کی بیروت میں پریس کانفرنس کی میزبانی پر لبنان کی مذمت کردی ہے۔

لبنانی دارالحکومت میں نیوزکانفرنس کرنے والے افراد کے نام بحرین نے اپنی دہشت گردی کی فہرست میں شامل کررکھے ہیں اور انھیں ’’دشمن اہلکار‘‘قرار دیا ہے۔ وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ ان افراد کی نیوزکانفرنس کا مقصد’’بحرین کی بادشاہت کے خلاف گستاخانہ اور دشنام طرازی پرمبنی الزامات کی نشرواشاعت تھا‘‘۔

وزارتِ خارجہ نے اپنے بیان میں اس بات پر گہرے افسوس اورمذمت کا اظہار کیا کہ بیروت نے دہشت گردی کی حمایت اور سرپرستی پرنامزد دشمن اہلکاروں کے لیے پریس کانفرنس کا اہتمام کیا۔اس کا مقصد مملکت بحرین کے خلاف گستاخانہ اور بدنیتی پر مبنی الزامات کی نشر واشاعت اور تشہیرتھا۔

وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ اس نے اس اقدام کے حوالے سے لبنانی حکومت کو باضابطہ طور پرسخت احتجاجی مراسلہ بھیجا ہے۔

اس نے اس سلسلے میں عرب لیگ کے جنرل سیکرٹریٹ کو بھی احتجاج کا سرکاری نوٹ بھیجا ہے۔اس میں لبنان کے اس ’’غیردوستانہ اقدام‘‘ کی مذمت کی گئی ہے۔

وزارت خارجہ نے لبنانی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ ایسے قابل مذمت طریقوں کو روکے جن کا مقصد مملکت بحرین کونالاں کرناہے اور یہ انتہائی بنیادی سفارتی اصول اور دونوں ملکوں کے عوام کے درمیان برادرانہ تعلقات سے مطابقت نہیں رکھتے ہیں۔

واضح رہے کہ اکتوبر میں بحرین نے منامہ میں تعینات لبنانی سفیر کو48 گھنٹے کے اندرملک چھوڑنے کی ہدایت کی تھی۔اس نے یہ فیصلہ لبنانی وزیراطلاعات کے یمن میں جاری جنگ کے بارے میں جارحانہ بیانات اورمؤقف کے پس منظرمیں کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں