سعودی لڑکی کا اپنی اسکول بس کا خواب کیسے پورا ہوا؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایک سعودی نوجوان خاتون نے "اسکول بس" کے مالک ہونے کا اپنا خواب پورا کر دیا۔ اسے اسکول بس کے ساتھ شدید لگاؤ اور بے پناہ محبت تھی۔ اس کی بس کو الصیاھید میں شاہراہ الدھنا پر شاہ عبدالعزیز اونٹ میلے کے دوران نمائش کے لیے پیش کیا گیا ہے۔

سعودی دوشیزہ سارہ السبیعی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بس کے ساتھ اپنی کہانی بتاتے ہوئے کہا کہ جب سے میں چھوٹی تھی،مجھے اسکول بس میں سوار ہونا پسند تھا۔ اگر ایک صبح میری بس چھوٹ جاتی تو میں رو پڑتی۔ یہ اس سے میری محبت تھی۔ میں سوچتی تھی اوربڑی ہو کر بس خریدنے کا خواب دیکھتی تھی اور اپنا کاروبار کرنے کا منصوبہ بناتی۔

اس نے مزید کہا کہ اپنی شادی کے بعد میں نے اپنے شوہر کو یہ خیال پیش کیا جس نے اس میں میرا ساتھ دیا۔ ہم "الحراج" مارکیٹ گئے اور ایک اسکول بس خریدی۔ پھر ہم اسے ضروری سامان بنانے کے لیے ورکشاپ میں لے گئے۔ تاکہ ہم اسے اپنے منصوبے کے مطابق تیار کرسکیں۔ ہم اس کی تیاری کے کام کی نگرانی کے لیے روز ورکشاپ جاتے۔ ہم گھنٹوں ورکشاپ میں رہتے اور ہمیں وقت گذرنے کا احساس تک نہ ہوتا۔ ہم بس کے قریب ہی قالین بچھا لیتے اور اپنے پروجیکٹ کے بارے میں بات کرتے۔

السبیعی نے مزید کہا کہ ہم نے تیاری کا مرحلہ مکمل کرنے کے بعد ریاض سیزن میں شرکت کی امید تھی لیکن ہم ایسا کرنے سے قاصر تھے۔اس لیے ہم ریاض کی ایک گلی میں گئے اور وہاں اپنا پراجیکٹ ایک موبائل کیفے کھولا۔ یہ بہت مشہور تھا۔ بہت سے صارفین نے ہمیں کہا کہ ہمیں بس لے جانا چاہیے۔ہم نے سوچاکہ ہمیں شاہ عبدالعزیز اونٹ فیسٹیول میں لے گئے جہاں ہمیں ہر طرح کے کافی سے محبت کرنے والے ملیں گے۔

اس نے مزید کہا کہ ہم نے خود کو تیار کیا اور ماح کی طرف خاص طور پر الصیاد کی الدہنا شاہراہ کی طرف چلے گئے۔ پہلے ہی دن ہمارے پاس بڑی تعداد میں گاہک آئے۔ ان میں ، مقامی، عرب اور غیرملکی تھے جنہوں نے ہماری تیار کردہ کافی کو بے حد پسند کیا۔

سارہ السبیعی نے "العربیہ ڈاٹ نیٹ" کے ساتھ اپنی گفتگو کا اختتام کرتے ہوئے کہا کہ "الحمد للہ، میرا پورا دن اسکول بس میں گزارنے کا میرا خواب پورا ہوا۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں