جوہری ایران

ایران کو ایٹمی قوت بننے سے روکنے کی حالیہ کوششوں کی تائید کرتے ہیں: سعودی عرب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایٹمی توانائی کی عالمی ایجنسی IAEA میں سعودی عرب کے مندوب شہزادہ عبدالله بن خالد بن سلطان کا کہنا ہے کہ ان کا ملک ایرانی جوہری معاہدے کی بحالی کے لیے ویانا میں جاری بات چیت کا قریب سے جائزہ لے رہا ہے۔

سعودی مندوب نے آج ہفتے کے روز اپنے بیان میں کہا کہ "ایران کو جوہری ہتھیار حاصل کرنے سے روکنے کے لیے اس وقت جو بھی بین الاقوامی کوششیں جاری ہیں ،،، سعودی عرب ان کی حمایت کرتا ہے۔ ساتھ ہی یہ مطالبہ کرتا ہے کہ موقع کو ضائع نہ کیا جائے اور مزید وقت کے ساتھ ایک ایسے حل تک پہنچا جائے جو خطے میں امن و استحکام برقرار رکھ سکے"۔

سعودی مندوب کا مزید کہنا تھا کہ "جہاں ہم آئی 'آئی اے ای اے' کے ڈائریکٹر کی جانب سے کی جانے والی کوششوں کی حمایت کرتے ہیں اور ان کوششوں کے ساتھ کھڑے ہیں وہاں ہم عالمی برادری پر زور دیتے ہیں کہ وہ اپنا کردار ادا کرے اور ان کوششوں کو سپورٹ کرے تا کہ 'آئی اے ای اے' ایران کی جوہری سرگرمیوں کا پتہ چلا کر ان کی جانچ کر سکے"۔

شہزادہ عبداللہ نے زور دے کر کہا کہ "ہم ایران سے بھی مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ ٹال مٹول چھوڑ کر اپنے جوہری پروگرام کے حوالے سے خلاف ورزیوں کا سلسلہ روک دے"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں