بغداد :حساس ترین علاقے گرین زون پر راکٹوں سے حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراقی دارالحکومت کے حساس ترین علاقے گرین زون میں ہفتے اور اتوار کی درمیانی شب دو کیٹوشیا راکٹ آ کر گرے۔ بغداد میں العربیہ کے نمائندے کے مطابق اس دوران میں امریکی سفارت خانے نے خطرے کے سائرن بجائے اور اپنے دفاعی نظام کو فعال کر دیا۔

نمائندے نے مزید بتایا کہ گرین زون پر یہ راکٹ حملہ شارع فلسطین کی سمت سے کیا گیا۔

عراقی سرکاری خبر رساں ایجنسی نے سیکورٹی میڈیا سیل کے بیان کے حوالے سے بتایا ہے کہ دو میں سے ایک راکٹ کو مار گرایا گیا۔

بیان کے مطابق پہلے راکٹ کو سیرم (دفاعی) نظام کے ذریعے فضا میں تباہ کر دیا گیا جب کہ دوسرا راکٹ اس میدان کے نزدیک گرا جو تقریبات کے لیے مختص ہے۔ حملے میں دو گاڑیوں کو نقصان پہنچا۔

حالیہ مہینوں میں اس نوعیت کے حملے کئی بار دیکھنے میں آئے ہیں جن میں خاص طور سے عراق میں امریکی افواج اور مفادات کو نشانہ بنایا جاتا ہے۔ کسی فریق نے ان حملوں کی ذمے داری قبول نہیں کی۔ تاہم واشنگٹن ان کارروائیوں کو ایران نواز عراقی گروپوں سے منسوب کرتا ہے جو عراق سے مکمل امریکی انخلا کا مطالبہ کرتے ہیں۔

دوسری جانب عراق میں انسداد دہشت گردی کے ادارے نے دو روز قبل انبار صوبے کے دو شہروں فلوجہ اور رمادی میں داعش تنظیم کی ٹولیوں کے 3 عناصر گرفتار کر لیے۔ یہ کارروائی انٹیلی جنس معلومات کی بنیاد پر کی گئی تھی۔

یاد رہے کہ عراق میں ڈرائیوروں کی ایک بڑی تعداد شہروں کے بیرونی راستوں پر مسلح گروپوں کی قائم کردہ چیک پوائنٹس پر بلیک میلنگ سے دوچار ہیں۔ یہاں سامان کی منتقلی انجام دینے والے ٹرکوں پر جبری چنگی عائد کر دی گئی ہے۔ طے کیے جانے والے فاصلے کے لحاظ سے چنگی کے نرخ بڑھتے جاتے ہیں۔ اس کے نتیجے میں عام صارف تک پہنچنے تک ان اشیاء کی قیمت میں کئی گنا اضافہ ہو چکا ہوتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں