مشہور عرب شاعر’الاعشیٰ‘ کی یاد میں ادبی اور ثقافتی پروگرام کا آغاز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی وزارت ثقافت نے تاریخی مقام ’منفوحہ‘ میں مشہورعرب شاعر میمون بن قیس جو ’الاعشیٰ‘ کے لقب سے مشہورہوئے کی ادبی خدمات کی یاد میں کل سے ثقافتی پروگرام شروع کرنے کی تیاری مکمل کرلی ہے۔

اس پروگرام کا مقصد ادب اور شاعری سے شغف رکھنے والے شہریوں کو عرب شاعر میمون بن قیس کی حیات اور ادبی خدمات کے بارے میں معلومات فراہم کرنا ہے۔

خیال رہے کہ شاعر میمون بن قیس المعروف ’الاعشیٰ‘ زمانہ قبل از اسلام کے آخری شاعر تھے جو 570ء میں پیدا ہوئے۔ عرب شاعری، اب اور لٹریچر میں انہیں بلند مقام حاصل ہے۔

شاعر میمون بن قیس کی ادبی خدمات پر یہ پروگرام کل 23 دسمبر سےپانچ جنوری 2022ء تک جاری رہےگا۔

اس تفریحی، علمی اور ادبی ایونٹ کے انعقاد کے لیے شاہراہ الفردیان میں یمامہ انٹرٹیمنٹ سینٹر کے قریب الریاض میں منفوحہ کالونی میں ایک عمارت میں جگہ مختص کی گئی ہے۔

تقریبا دو ہفتوں تک جاری رہنے والے اس پروگرام میں زائرین اور شرکا کے لیے علمی،ثقافتی، ادبی اور تفریحی سرگرمیاں شامل ہیں۔ اس دوران زائرین کو الاعشیٰ کی زندگی، المنفوحہ کالونی کی تاریخ اور اس میں سماجی، ثقافتی اور اقتصادی زندگی کے بارے میں معلوماتی پروگرام منعقد کیے جائیں گے۔

اس تقریب میں پرفارمنس تھیٹر کے سیکشن سمیت متعدد سیکشنز شامل ہیں جو زائرین کو ڈرامہ "دی پوئٹ میکر" اور شاعر کی زندگی اور ان کی مشہور نظموں پرشاعری کی شامیں پیش کی جائیں گی۔ منفوحہ کالونی کی تاریخ پر تفصیل سے روشنی ڈالی جائے گی اور شاعر الاعشیٰ کی زندگی پر پانچ ادبی شخصیات تفصیلات سے روشنی ڈالیں گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں