اسرائیل: ایران کے خلاف فوجی کارروائی کے لیے اضافی دفاعی بجٹ کی منظوری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی حکام نے گذشتہ ہفتے ایران پر اسرائیلی حملے کی تیاریوں سے متعلق افواہوں کی تردید کی تھی مگر اسرائیلی پارلیمنٹ [ کنیسٹ] کی فنانس کمیٹی نے فوجی کارروائی کی تیاری کے لیے نو ارب (تقریباً 2.9 بلین ڈالر) کے اضافی دفاعی بجٹ کی منظوری دی۔

تفصیلات کے مطابق کمیٹی نے جمعرات کی شام خفیہ بجٹ کے فریم ورک کے اندر اضافی بجٹ کی منظوری دی جس کا مقصد فوجی کارروائی کی تیاری تھا۔

اگر مذاکرات ناکام ہوئے تو

اخبار "اسرائیل ہیوم" کے مطابق ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ قدم ان اطلاعات کے دورران سامنے آیا ہے کہ اسرائیل اپنے جوہری پروگرام کو کم کرنے کی سفارتی کوششوں کی ناکامی کی صورت میں ایران کے خلاف فوجی کارروائی کے لیے ہنگامی منصوبے تیار کر رہا ہے۔

رپورٹ میں اس بات کی بھی نشاندہی کی گئی ہے کہ بجٹ خفیہ طور پر اسرائیلی وزارت دفاع کو منتقل کیا گیا تھا جس پر سیکیورٹی بجٹ پر مشترکہ کمیٹی کے ذریعے بحث کی گئی۔

اخبار نے ایک اسرائیلی اہلکار کے حوالے سے کہا ہے کہ 'اس اضافے کا فیصلہ حالیہ ہفتوں میں کیا گیا تھا اس لیے اسے عام بجٹ میں شامل نہیں کیا گیا'۔

امریکا اسرائیل معاہدہ

اس کے علاوہ یہ پیش رفت امریکی قومی سلامتی کے مشیر کے گذشتہ ہفتے تل ابیب کے دورے کے بعد سامنے آئی جہاں انہوں نے اسرائیلی صدر اسحاق ہرزوگ اور وزیر دفاع بینی گینٹز سے ملاقات کی۔

اس ملاقات میں فریقین نے ایران کو وقت حاصل کرنے کی کوششوں سے روکنے کی ضرورت پر زور دیا اور عالمی برادری سے ایرانی دھمکیوں کو سنجیدگی سے لینے کا مطالبہ کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں