یمن: الحدیدہ معاہدے کی سپورٹ کے مشن کے نئے سربراہ کا تقرر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اقوام متحدہ کے ایک اعلان کے مطابق آئر لینڈ سے تعلق رکھنے والے ریٹائرڈ میجر مائیکل بیری کو یمن میں الحدیدہ سمجھوتے کی سپورٹ کے واسطے اقوام متحدہ کے مشن (UNMHA) کا سربراہ مقرر کر دیا گیا ہے۔ وہ بھارت کے ریٹائرڈ جنرل ابھجیت گوہا کی جگہ لیں گے۔

الحدیدہ سمجھوتے کی سپورٹ کے لیے اقوام متحدہ کا مذکورہ مشن الحدیدہ صوبے میں فائر بندی کی نگرانی کے مقصد سے تشکیل دیا گیا تھا۔ اس کی تشکیل اسٹاک ہوم معاہدے کے تحت عمل میں آئی۔ یمنی حکومت اور حوثیوں کے بیچ اس معاہدے پر 2018ء کے اواخر میں اقوام متحدہ کی سرپرستی میں دستخط کیے گئے تھے۔

واضح رہے کہ اقوام متحدہ کا مشن اُس وقت سے الحدیدہ میں فائر بندی پر عمل درامد کو یقینی بنانے میں ناکام رہا۔ حوثی ملیشیا کی جانب سے فائر بندی کی براہ راست خلاف ورزیوں کا سلسلہ جاری رہا۔ اس دوران میں بارودی سرنگوں کی تنصیب اور شہریوں پر بم باری کی جاتی رہی۔ ملیشیا نے الحدیدہ شہر اور اس کی بندرگاہ سے انخلا سے بھی انکار کر دیا۔

اقوام متحدہ کی ویب سائٹ کے مطابق ریٹائرڈ میجر مائیل بیری طویل پیشہ ورانہ تجربہ رکھتے ہیں۔ وہ 1975ء میں آئرلینڈ کی فوج میں بطور افسر شامل ہوئے۔ انہوں نے 2016ء سے 2018ء تک لبنان میں اقوام متحدہ کے مشن کے سربراہ اور اقوام متحدہ کی نگراں فورس (یونیفل) کے کمانڈر کے طور پر بھی خدمات انجام دیں۔

اسی طرح بیری نے بیرون ملک تعینات کی کارروائیوں میں بھی 10 برس گزارے۔ ان میں افغانستان، بوسنیا ہرزگوینیا، عراق، لبنان، صومالیہ اور یوگنڈا شامل ہیں۔

وہ آئرلینڈ کی دفاعی افواج کی تربیت کے ڈائریکٹر اور عسکری اکیڈمی کے کمانڈر بھی رہ چکے ہیں۔ سال 2018ء میں ریٹائرمنٹ کے بعد سے انہوں نے آئرلینڈ کی جامعات میں لیکچر دیے۔ علاوہ ازیں افریقا میں اقوام متحدہ کی تحقیقی کونسلوں کی قیادت بھی کی۔

مائیکل بیری کامرس اسٹڈیز اور نیشنل سیکورٹی اسٹریٹجی میں ماسٹرز کی ڈگریاں رکھتے ہیں۔ وہ آئرلینڈ کی دفاعی افواج کے زیر انتظام کمانڈ اینڈ اسٹاف اسکول سے فارغ التحصیل ہوئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں