سعودی عرب : ہر جگہ پر ماسک اور سماجی فاصلے کی پابندی دوبارہ عائد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں کرونا کی وبا کے حوالے سے متعدد حفاظتی اقدامات کو دوبارہ سے لازم کر دیا گیا ہے جن میں چہرے پر ماسک لگانا سرفہرست ہے۔ یہ اقدام ایسے وقت سامنے آیا ہے جب دنیا بھر میں کرونا کی نئی صورت 'اومیکرون' سے متاثر افراد کی تعداد میں اضافہ دیکھا جا رہا ہے۔

آج بدھ کے روز سعودی وزارت داخلہ کے ذمے دار ذرائع نے بتایا کہ مملکت میں (بند یا کھلے) تمام مقامات پر اور سرگرمیوں اور تقریبات میں ماسک لگانے اور سماجی فاصلہ رکھنے کی پابندی دوبارہ سے عائد کر دی گئی ہے۔ سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی (ایس پی اے) کے طمابق یہ فیصلہ جمعرات 30 دسمبر کی صبح 7 بجے سے نافذ العمل ہو گا۔

مملکت میں کرونا کے تصدیق شدہ کیسوں میں اضافہ ہو رہا ہے۔ وزارت صحت نے منگل کے روز اعلان میں بتایا کہ چوبیس گھنٹوں کے دوران کووڈ-19 کے 602 نئے کیسوں اور ایک فوتگی کا اندراج ہوا جب کہ 147 افراد اس وبا سے صحت یاب ہوئے۔

سعودی وزارت تجارت نے دسمبر کے آغاز میں اعلان کیا تھا کہ کرونا وائرس کی بوسٹر خوراک یکم فروری 2022ء سے بازاروں اور تجارتی مراکز و تنصیبات میں داخلے کے لیے لازمی شرط ہو گی۔

یاد رہے کہ سعودی وزارت داخلہ نے اکتوبر میں طبی حوالے سے احتیاطی اقدامات اور حفاظتی تدابیر میں نرمی کا اعلان کیا تھا۔ یہ فیصلہ مملکت میں کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد میں واضح کمی کے بعد سامنے آیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں