کوریائی خواتین کا سعودی برقع اور نقاب میں اونٹوں کے میلے کا دورہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں جنوبی کوریا سے تعلق رکھنے والی ایک خاتون سیاح اور اس کی پھوپھی نے مقامی عربی پوشاک زین تن کر کے کنگ عبدالعزیز کیمل فیسٹول کا دورہ کیا۔ صیاہد میں ہونے والے اس میلے کو سیاحتی اور سفارتی وفود کی بھرپور توجہ حاصل ہو رہی ہے۔

جنوبی کوریا کی سیاح خاتون کا نام شیمی جین ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ "میں امریکا میں مقیم ہوں اور کمپیوٹر پروگرامنگ کے شعبے میں کام کرتی ہوں۔ یہ میرا سعودی عرب کا پہلا دورہ ہے۔ میں یہاں اپنی پھوپھی سے ملنے آئی ہوں جو مملکت میں ہی مقیم ہیں۔ انہوں نے مجھے اونٹوں کے اس میلے کے بارے میں بتایا۔ میں اپنے شوہر کے ساتھ اور پھوپھی کے ہمراہ میلے میں آئی ہوں"۔

شیمی جین کے مطابق انہیں سعودی خواتین کے پہنے جانے والے برقع اور نقاب پسند آئے لہذا انہوں نے اپنی پھوپھی کے ساتھ مل کر یہ پہننے کا تجربہ کیا۔

شیمی نے مزید بتایا کہ انہیں اس میلے کے کئی امور نے متوجہ کیا۔ ان میں صحرائی علاقے میں پیش کی جانے والی جدید خدمات، مقابلوں میں نوجوانوں کا جوش و خروش اور تماشائیوں کی جانب سے بھرپور طریقے سے حوصلہ افزائی شامل ہے۔

شیمی کی سعودی عرب میں مقیم پھوپھی شنگ جین کے مطابق انہوں نے اپنی بھتیجی کو سعودی عرب کا دورہ کرنے اور اس خوب صورت ملک کی تہذیب و ورثے کا مشاہدہ کرنے کی دعوت دی تھی۔ شنگ جین نے بتایا کہ "ہم کنگ عبدالعزیز کیمل فیسٹول کے مختلف مقامات کے درمیان منتقل ہو کر وہاں یادگاری تصاویر بنا رہے ہیں۔ میں پر تپاک استقبال اور مہمان نوازی پر میلے کی انتظامیہ کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتی ہوں"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں