ویڈیو: ایرانی ملیشیا کا بغداد میں ایک امریکی اڈے پر ڈرون حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سوشل میڈیا پر پوسٹ کی گئی ایک ویڈیو میں عراق میں ایران کی حمایت یافتہ ملیشیاؤں کی طرف سے 5 جنوری 2022 کو بغداد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر قائم امریکی اڈے پر ڈرون حملے کی تیاری کرتے دکھایا گیا ہے۔

ویڈیو فوٹیج میں اپنے آپ کو"ابابیل بریگیڈز" کہنے والے ایک گروپ کے عناصر کو دکھایا گیا ہے جوامریکی سفارت خانے کے اندر وکٹوریہ کے اڈے کوڈرون سے نشانہ بنا رہے ہیں۔ اس ڈرون پر"قائد قاسم سلیمانی کا انتقام‘‘ لکھا گیا ہے۔

عراقی میڈیا نے بدھ کو علی الصبح اطلاع دی کہ بغداد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کو 4 کاتیوشا راکٹوں سے نشانہ بنایا گیا جو ہوائی اڈے سے متصل جہاد کالونی سے داغے گئے۔

مقامی میڈیا کا کہنا ہے کہ راکٹوں سے وکٹوریہ بیس کو نشانہ بنایا جس میں بغداد کے ہوائی اڈے پر موجود امریکی فوجی بھی شامل ہیں۔ حملے کے بعد سائرن بجائے گئے اور ہیلی کاپٹر دارالحکومت کے جنوب مغرب کے علاقے میں پرواز کرتے رہے۔

عراق میں بین الاقوامی اتحاد کے ایک سیکیورٹی اہلکار نے بھی کہا کہ بغداد کے ہوائی اڈے پر اتحاد کے خلاف مسلح ڈرون مار گرائے گئے۔

انہوں نے "اے ایف پی" کو بتایا کہ بغداد کے ہوائی اڈے پر جہاں ایک عراقی فوجی اڈے میں اتحادی افواج کے متعدد مشاورتی دستے تعینات ہیں پر دو ڈرونز نے پیر کی صبح مقامی وقت کے مطابق تقریباً 04:30 بجے" حملہ کیا۔

یہ حملہ ایرانی پاسداران انقلاب میں قدس فورس کے سابق کمانڈر قاسم سلیمانی اور پاپولر موبیلائزیشن فورسز کے نائب سربراہ ابو مہدی المہندس کے قتل کی دوسری برسی کے موقع پر کیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں