.

خامنہ ای کی ویب سائٹ پر ٹرمپ کے قتل کی فرضی وڈیو جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

وائٹ ہاؤس کی پریس سکریٹری جین بیسکی نے ایرانی رہبر اعلی کی ویب سائٹ پر جاری وڈیو کلپ کی مذمت کرنے یا اس پر کوئی تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا ہے۔ اس وڈیو کلپ میں ڈرون حملے میں سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی ہلاکت کی فرضی منظر کشی کی گئی ہے۔

ایرانی رہبر اعلی علی خامنہ ای کی سرکاری ویب سائٹ پر جاری وڈیو ایک اشتعال انگیز اقدام ہے جب کہ ویانا میں ایرانی جوہری پروگرام کے حوالے سے بین الاقوامی بات چیت چل رہی ہے۔

بدھ کو رات گئے پوسٹ کی گئی وڈیو میں ایرانی عسکری ذمے داران کو جدید ترین ڈرون ٹکنالوجی کے ذریعے ٹرمپ کو نشانہ بناتے ہوئے دکھایا گیا ہے جو گولف کھیل رہے ہیں۔ گولف کھیلے جانے کی جگہ کا ماحول فلوریڈا میں ٹرمپ کے گھر سے ملتا جلتا نظر آ رہا ہے۔

یہ وڈیو ایرانی القدس فورس کے سابق کمانڈر اور بیرون ملک ایران کی خفیہ نیم عسکری کارروائیوں کے منصوبہ ساز قاسم سلیمانی کی دوسری برسی کے بعد جاری کی گئی ہے۔ سلیمانی 3 جنوری 2020ء کو امریکا کے حملے میں مارا گیا تھا۔

ایران ڈونلڈ ٹرمپ اور 50 امریکی موجودہ اور سابق ذمے داران پر پابندیاں عائد کر چکا ہے جن کے بارے میں اس کا دعوی ہے کہ وہ قاسم سلیمانی کے قتل کی کارروائی میں ملوث ہیں۔ بغداد ہوائی اڈے کے نزدیک ڈرون طیارے کے حملے میں سلیمانی کے ساتھ عراقی ملیشیا الحشد الشعبی کا نائب سربراہ ابو مہدی المہندس بھی ہلاک ہو گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں