سعودی عرب: ایونٹ بارے افواہ پھیلانے والوں کی گرفتاری کا حکم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے پبلک پراسیکیوشن نے انکشاف کیا کہ اس نے سوشل میڈیا پر ایسے اکاؤنٹس کی نشاندہی کی ہے جو حالی ہی میں ہونے والے ایک ایونٹ[پروگرام] سے متعلق بے بنیاد افواہیں پھیلا رہے تھے اور اس کے حوالے سے بے بنیاد باتوں کو فروغ دے رہے تھے۔

سعودی عرب کے پبلک پراسیکیوشن نے دعویٰ کیا کہ مملکت میں منعقد ہونے والی ایک سرگرمی کے حوالے سے افواہیں پھیلانے والوں کا تعلق بیرون ملک دشمن عناصر سے ہے۔ بیان میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کو حکم یا گیا ہے کہ وہ افواہیں پھیلانے والوں کو فوری گرفتار کرکے انہیں عدالت میں پیش کریں۔

سعودی عرب کی سرکاری نیوز ایجنسی’ایس پی اے‘ کے مطابق ملک میں کسی بھی سرگرمی کے بارے میں سوشل میڈیا پر افواہیں پھیلانا ملک دشمنی کی سرگرمیوں کا حصہ ہے اور ایسی مجرمانہ کارروائیوں کے انسداد کے لیے جرائم پیشہ عناصر کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

قید اور جرمانہ

سعودی عرب کے پبلک پراسیکیوٹر نے نشاندہی کی کہ افواہیں پھیلانے جیسی کارروائیوں میں 5 سال تک قید اور 30 لاکھ ریال جرمانہ، زیراستعمال آلات کی ضبطی اور یگر سزائیں دی جاسکتی ہیں۔

پبلک پراسیکیوشن نے اس بات پر بھی زور دیا کہ افواہوں اور جھوٹ کو فروغ دینا ان بڑے جرائم میں سے ایک ہے جس کے لیے گرفتاری کی ضرورت ہوتی ہے، خاص طور پر افواہوں کا تعلق بیرون ملک سرگرم دشمن عناصر سے ہو تو ایسے لوگوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں