انسانی امدادی کارروائیوں میں دنیا گھومنے والا سعودی فوٹوگرافر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

تقریبا 17 برس قن؛ سعودی فوٹو گرافر عبداللہ النحیط کو اپنے خاندانی گھر میں ایک پرانا کیمرا ملا تھا۔ اس کے بعد جس چیز پر بھی عبداللہ کی نظر پڑتی وہ اس کو کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کر لیتا تھا۔ اُس وقت عبداللہ کے والد کو یہ معلوم نہ تھا کہ یہ بچہ ایک دن تاجکستان میں سعودی عرب کی انسانی امدادی کارروائیوں ، اردن میں الزعتری پناہ گزین کیمپ اور سوڈان میں کسلا پناہ گزین کیمپ ، عدن میں امدادی کارروائیوں اور گیمبیا میں طبی کوششوں وغیرہ کی کوریج اپنے کیمرے کے ذریعے انجام دے گا۔

عبداللہ کا پیشہ ورانہ البم امدادی کارروائیوں تک محدود نہیں بلکہ اس نے الُعلا میں گیس کے غباروں اور جنوبی سرحد پر توپ خانوں کے علاوہ مملکت کی میزبانی میں منعقد ہونے والی پہلی "فارمولا 1" ریس کے مناظر بھی تصویری شکل میں محفوظ کیے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے عبداللہ النحیط نے بتایا کہ اس نے 2004ء میں پہلا ڈیجیٹل کیمرہ خریدا تھا۔ اس وقت اس کیمرے کی قیمت بہت زیادہ تھی۔ یہ ڈیجیٹل کیمرہ عبداللہ کے شب و روز کا ساتھی بن گیا۔ یہاں تک کہ اس نے پیشہ ورانہ فوٹوگرافی کے میدان میں قدم رکھ دیا۔

بعد ازاں عبداللہ اپنی محنت کے ذریعے مشہور ترین فوٹوگرافروں کی صف میں شامل ہو گیا۔ اپنے کیمرے کے مہنگے ترین عدسوں کے ذریعے خوب سے خوب صورت ترین تصاویر دنیا کے سامنے پیش کرنے لگا۔

عبداللہ 2011ء میں عربی روزنامے "سبق" کے ذریعے صحافت کی دنیا میں داخل ہوا۔ عرب دنیا میں انقلابی "بہار" کے آغاز کے موقع پر وہ اُن اولین فوٹوگرافروں میں سے تھا جنہوں اپنے کیمروں کے ذریعے جبری ہجرت کا شکار ہونے والے شامی پناہ گزینوں کی لبنان منتقلی کو لوگوں کے سامنے پیش کیا۔اس تجربے نے عبداللہ کے اندر رضاکارانہ جذبے کو ابھارا۔ بعد ازاں وہ بین الاقوامی تنظیموں کے ساتھ غریب اور آفت زدہ ملکوں کے سفر کے حوالے سے جانا جانے لگا۔

عبداللہ کے مطابق اس نے گذشتہ 10 برسوں کے دوران میں حج اور عمرہ سیزن کی تصاویر بھی کیمرے میں محفوظ کیں۔ مملکت میں کوئی ایسی سرگرمی نہیں ہوتی جہاں عبداللہ کا کیمرا موجود نہ ہو۔

عبداللہ النحیط نے اپنے کیمرے اور قلم کے امتزاج سے مختلف شعبوں سے متعلق 100 سے زیادہ صحافتی رپورٹیں تیار کیں۔ عبداللہ نے کرونا کی وبا پھیلنے کے بعد سے اس حوالے سے 120 سے زیادہ پریس کانفرنسوں کی کوریج کی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں