لبنانی میں شہری کی بینک ملازمین کو یرغمال بنا کر دھماکے سے اڑانے کی دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ہالی وڈ کی کسی ایکشن فلم کے سین سے ملتے جلتے منظر میں ،،، لبنان میں ایک شہری نے مغربی بقاع میں واقع علاقے "جب جنین" میں ایک بینک میں دھاوا بول دیا۔ ساتھ ہی اس نے دھمکی دے ڈالی کہ اگر اس کو اپنے بینک اکاؤنٹ سے 50 ہزار ڈالر کی رقم حاصل نہ ہوئی تو وہ خود سوزی کر لے گا۔

بینک انتظامیہ کی جانب سے اس مطالبے کو مسترد کر دینے پر مذکورہ لبنانی نے بموں اور دھماکا خیز مواد دے بھرا بیگ کھول لیا اور بینک میں پٹرول چھڑک دیا۔ اس نے دھمکی دی کہ اگر اس کی رقم حوالے نہ کی گئی تو وہ بینک میں آگ لگا کر اسے دھماکے سے اڑا دے گا۔

بعد ازاں سیکورٹی فورسز نے بینک کا گھیراؤ کر لیا اور اس شہری کے ساتھ مذکرات شروع کر دیے۔ بات چیت کے نتیجے میں ابتدائی طور پر اس شخص نے اپنے قبضے میں موجود پستول سیکورٹی فورسز کے حوالے کر دیا۔ بعد ازاں اس نے مطلوبہ رقم حاصل ہونے پر خود کو بھی حوالے کر دیا۔

لبنانی ڈپازٹرز کی ایسوسی ایشن کے مطابق ایک لبنانی شہری نے جب جنین میںBBAC کی ایک شاخ میں بینک ملازمین کو کئی گھنٹوں تک یرغمال بنا کر رکھا۔ آخر کار اپنی 50 ہزار ڈالر کی رقم مل جانے پر مذکورہ شخص نے اسے اپنے گھر کے ایک فرد کو دے کر خود کو سیکورٹی فورسز کے حوالے کر دیا۔

لبنانی شہری کے ساتھ تحقیقات جاری ہیں۔ استغاثہ نے اس شہری کو حراست میں لینے اور بزور طاقت حاصل کی گئی رقم واپس کیے جانے کا حکم جاری کیا۔ البتہ اس شہری کی بیوی ابھی تک نظروں سے اوجھل ہے جس نے اپنے شوہر سے 50 ہزار ڈالر کی رقم وصول کی تھی۔ رقم کی واپسی کے لیے لبنانی شہری کے گھر پر چھاپا مارا گیا تھا۔

واضح رہے کہ 2019ء سے لبنان میں یہ پابندی عائد ہے کہ بینک کھاتوں سے غیر ملکی کرنسی میں مالی رقم نہیں نکالی جا سکتی۔ لوگ صرف لبنانی لیرہ کی شکل میں رقم نکلوا سکتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں