امارات کے بعد حوثیوں کا اگلا ہدف اسرائیل کے اندر ہو سکتا ہے ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

میڈیا رپورٹوں کے مطابق بحر احمر پر پھیلی اسرائیل کی "ایلات بندر گاہ" حوثی ملیشیا کی جانب سے ڈرون طیاروں کا آئندہ ہدف ہو سکتی ہے۔ اس سے قبل گذشتہ ہفتے ایک اسرائیلی اخبار کی ویب سائٹ کا کہنا تھا کہ مستقبل میں ایران اور اسرائیل کے درمیان کسی بھی جنگ کی صورت میں ایران اسرائیلی اہداف کے ایک مجموعے کو نشانہ بنا سکتا ہے۔ ان میں جوہری اور تزویراتی تنصیبات سرفہرست ہیں۔

عبرانی زبان کے اسرائیلی اخبار "ہآرٹز" کے مطابق گذشتہ ہفتے ابوظبی میں تنصیبات کو نشانہ بنانے کے بعد حوثی ملیشیا کا دوسرا ہدف "ایلات" ہو سکتا ہے۔ مشرق وسطی میں ایران کے ایجنٹوں کے ذریعے اس نوعیت کے حملے تہران کی جانب سے یہ پیغام ہے کہ وہ اپنی کارستانیوں سے پیچھے ہٹنے کا ارادہ نہیں رکھتا ہے۔

گذشتہ پیر کے روز امارات میں تنصیبات پر حوثیوں کے حملے کے بعد عرب دنیا اور عالمی برادری کی جانب سے بڑے پیمانے پر مذمت سامنے آئی تھی۔ ساتھ ہی ابوظبی نے باور کرایا تھا کہ اس حرکت پر حوثیوں کو بخشا نہیں جائے گا۔

یہ تمام پیش رفت ایسے وقت میں سامنے آ رہی ہیں جب اسرائیل نے ایران کا علاج کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔ اسرائیلی وزیر اعظم نفتالی بینیٹ یہ کہہ چکے ہیں کہ ان کے ملک پر یہ ذمے داری ہے کہ وہ ایرانی نظام کو نمایاں صورت میں ضرر پہنچائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں