سعودی وزیر انصاف کا اپنے برطانوی ہم منصب سے عدالتی تعاون پر تبادلہ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے وزیر انصاف ڈاکٹر ولید الصمعانی نے کل منگل کو برطانوی دارالحکومت لندن میں برطانوی وزیر انصاف اور نائب وزیراعظم ڈومینک راب سے ملاقات کی۔ دونوں وزرا نے ملاقات کے دوران دو طرفہ عدالتی اور انصاف کے شعبے میں تعاون بڑھانے کے لیے باضابطہ بات چیت کی۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ترقی، تعلقات کی بہتری اور تعام شعبوں میں تعلقات کو فروغ دینے سے کے حوالے سے گذشتہ برسوں کے دوران شروع کیے گئے تبدیلی کے منصوبوں کے ذریعے روشنی میں سعودی قوم اور ملک میں مقیم غیرملکی باشندوں نے ہرشعبے میں ترقی ہوئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت کی دلچسپی نے سعودی عرب میں عدلیہ اور انصاف کے شعبے میں اس کی بنیادی اور طریقہ کار کی سطحوں پر ایک معیاری ترقیاتی تبدیلی میں حصہ ڈالا ہے۔ سعودی عرب میں خصوصی ادارہ جاتی انصاف کے تصور کے اطلاق، خصوصی عدلیہ کی فعالی اور انسانی حقوق کے لیے تعاون، عدالتوں اور نوٹریوں میں عدالتی خدمات کی ڈیجیٹل تبدیلی کے علاوہ 130 سے زیادہ عدالتی اور جوڈیشل سروسز کو ڈیجیٹل بنانے میں بہتری ہوئی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ عدالتی سہولت ان سب سے نمایاں شعبوں میں سے ایک ہے جس نے بہت سے ایسے منصوبوں کو فعال کرنے میں اہم کردارا ادا کیا جو انصاف کے حصول اور عدالتی ضمانتوں کو مستحکم کرنے پر مثبت انداز میں اثر انداز ہوئی ہیں۔ عدالتی شعبے میں اصلاحات سے انصاف کو یقینی بنانے اور عدالتی ضمانتوں کو فعال کرنے میں مدد ملی۔ اس سےدو سطحوں سپریم کورٹ کے سامنے کیس کو فعال کرنےاور سہولیات سے مستفید ہونے والوں کے لیے قانونی چارہ جوئی کو آسان بنانے کا موقع ملا۔ اس طرح کمرشل اور صارف عدالتوں کے نظام عدل کو فعال اور مکمل کرنے میں مدد ملی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں