سعودی عرب: تفریحی کیمپ میں مگرمچھ، ہرن اور گدھ کا بوسیدہ گوشت کھلائے جانے کا انکشاف

اڑھائی سو کلو گرام فاسد گوشت ضبط، کیمپ سیل، ملزمان گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے مغرب میں واقع عسیر میونسپلٹی میں صحت کے حکام اس وقت حیران رہ گئے جب انہیں خمیس مشیط شہر کی المٗۃ روڈ پر واقع کیمپوں میں سے ایک کیمپ میں گوشت کے فریج میں مردہ جانوروں کی موجودگی کی اطلاع ملی۔

حکام کو بتایا گیا کہ تفریحی کیمپ میں بڑی مقدار میں خوراک اور خراب گوشت رکھا گیا ہے جسے فریجوں میں رکھا گیا تھا۔ فاسد اور مضر صحت گوشت کی بڑی مقدار ضبط کرلی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق عسیر میونسپلٹی میں شام کے وقت مانیٹرنگ کرنے والی ٹیم کو خمیس مشیط میں پکنک کیمپوں میں سے ایک میں خراب کھانے اور گوشت کی اطلاع ملی۔ یہ گوشت پکنک منانے کے لیے آنے والے سیاحوں کو دیا جا رہا تھا۔

حفظان صحت کے اصولوں کی خلاف ورزی

عسیر میونسپلٹی نے واضح کیا کہ قبضے میں لیے گئے گوشت کی مقدار250 کلو گرام ہے۔ گوشت کے خراب ہونے کی واضح علامات موجود تھیں۔ اس مقام پر صحت اور صفائی کا انتظام انتہائی ناقص تھا۔ سامان پر زنگ کے نشانات تھے۔ شکایت کے بعد نہ صرف خراب گوشت قبضے میں لے لیا گیا بلکہ کیمپ کو فوری طورپر بند کردیا گیا ہے۔

عسیر میونسپلٹی نے واضح کیا کہ تمام خراب گوشت تلف کیے جانے سے پہلے ضبط کر لیا گیا۔ حکام کاکہنا ہے کہ قبضے میں لیے گئے گوشت میں ہرن، گدھ اور مگرمچھ کا گوشت شامل ہے۔

غور طلب ہے کہ کیمپ کے خلاف کارروائی سعودی وائلڈ لائف اتھارٹی، اسپیشل فورس فار انوائرمنٹل سیکیورٹی اور پولیس کے تعاون سے کی گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں