شامی دارالحکومت دمشق کے اطراف اسرائیل کا میزائل حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل نے ایک بار پھر شام کے دارالحکومت دمشق کے اطراف علاقوں کو فضائی حملوں کا نشانہ بنایا ہے۔

شام کے عسکری ذرائع نے آج پیر کے روز بتایا ہے کہ شمال مشرقی لبنان کی سمت سے آنے والے اسرائیلی میزائلوں نے دمشق کے اطراف بعض مقامات کو نشانہ بنایا۔ مزید یہ کہ شامی فضائی دفاعی نظام نے ان میزائلوں کا راستہ روکا۔ اس کے نتیجے میں تھوڑا مادی نقصان پہنچا۔

یہ حملہ رواں ماہ کے اوائل میں شام میں انسانی حقوق کے نگراں گروپ المرصد کی اُن رپورٹوں کے بعد سامنے آیا ہے جن میں کہا گیا تھا کہ لبنانی حزب اللہ نے دمشق کے جنوب میں واقع قصبے خربہ الورد میں ایک پرانے فوجی اڈے کی کھدائی اور توسیع کا کام شروع کر دیا۔ یہ اڈہ ماضی میں شامی حکومتی فورسز کی جانب سے جاسوس طیاروں کے استعمال کی تربیت اور فضائی انٹیلی جنس کے عناصر کی تربیت کے واسطے استعمال کیا جاتا تھا۔ حزب اللہ ملیشیا کے عناصر 2015ء سے اس جگہ موجود ہیں۔

یاد رہے کہ گذشتہ برسوں کے دوران میں اسرائیل نے شام کے اندر سیکڑوں فضائی حملے کیے۔ ان حملوں میں شامی حکومتی فوج کے ٹھکانوں اور بالخصوص ایران اور حزب اللہ کے اہداف کو نشانہ بنایا گیا۔ تاہم تل ابیب کی جانب سے شاذ و نادر ہی سرکاری طور پر ان کارروائیوں کی تصدیق کی جاتی ہے۔ البتہ اسرائیلی عہدے داران بارہا اس موقف کو دو ٹوک انداز سے بیان کرتے رہے ہیں کہ شام میں ایران کے وجود کو قدم جمانے کا موقع نہیں دیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں