لوسیڈ موٹرز کے سعودی عرب میں کاروں کی تیاری کے غیرمسبوق معاہدے

امریکی کمپنی مملکت میں سالانہ ڈیڑھ لاکھ کاریں تیار کرے گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
6 منٹس read

بین الاقوامی سطح پرالیکٹرک کاریں تیارکرنےوالی کمپنی لوسیڈ موٹرز نے سعودی عرب میں کاروں کی تیاری کےپلانٹ لگانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس سلسلے میں کمپنی نے آج منگل کو نیس ڈیک اسٹاک ایکسچینج میں درج Lucid Group Inc مربوط پیداوار کے قیام کی تیاریوں کے سلسلے میں سعودی وزارت سرمایہ کاری، سعودی صنعتی ترقیاتی فنڈ اور شاہ عبداللہ اکنامک سٹی کے ساتھ معاہدوں پر دستخط کرنے کا اعلان کیا۔ان معاہدوں کے بعد کمپنی مملکت میں کاروں کے لیے پلانٹ لگائے گی۔

توقع ہے کہ ان معاہدوں سے مملکت کے اسٹریٹجک ہدف کے حصول میں تیزی لانے میں مدد ملے گی جس کا مقصد نقل و حمل کے شعبے کو پائیدار توانائی کو اپنانے میں تبدیل کرکے اقتصادی وسائل کو متنوع بنانا ہے۔

پیداوار

لوسیڈ کوتوقع ہے کہ وہ سعودی عرب میں اپنی پہلی بین الاقوامی سہولت بنانے کے نتیجے میں اگلے پندرہ سالوں میں تقریباً 3.4 بلین ڈالر کا کاروبار کرے گی جو لوسیڈ کو اپنی مصنوعات کی بڑھتی ہوئی مانگ کو پورا کرنے کے قابل بنائے گا۔

لوسیڈ گروپ کے ’سی ای او‘ اور سی ٹی او پیٹر رالنسن نے کہا کہ لوسیڈ ہمیشہ مثبت تبدیلیاں لانے کے لیے کوشاں رہتی ہے۔اس لیے یہ الیکٹرک گاڑیوں کی تیاری کودنیا کے سب سے بڑے تیل پیدا کرنے والے ممالک میں لانا مناسب سمجھتی ہے۔ بین الاقوامی صنعت کے شعبے میں یہ ایک عملی اور فطری قدم ہےجوہمیں عالمی منڈی میں مانگ کے ساتھ مطابقت رکھتے ہوئے اپنے برانڈ کو مستحکم کرنے اور اپنے کاروباری پورٹ فولیو کے دائرہ کار کو بڑھانے کے قابل بنائے گا۔

سعودی وزارت سرمایہ کاری، شاہ عبداللہ اکنامک سٹی اور سعودی انڈسٹریل ڈیولپمنٹ فنڈ کے ساتھ شراکت دار ہمیں مجموعی طور پر مملکت کے اندر اور باہر لگژری کاروں اور SUVs کی مانگ اور ان کی فروخت میں مدد دے گی یہی وجہ ہے کہ ہم نیا کی جدید ترین الیکٹرک گاڑیوں کو مزید بین الاقوامی منڈیوں میں لانے کے لیے بہت پرجوش ہیں۔

لوسیڈ نے شاہ عبداللہ اکنامک سٹی کومملکت میں اپنی پہلی بین الاقوامی مینوفیکچرنگ سہولت قائم کرنے کے لیے بہترین مقام کے طورپر منتخب کرنے سے پہلے بہت سے دستیاب مواقع کی تلاش کی۔ نئی سہولت مکمل طور پر لوسیڈ گروپ کی ملکیت ہوگی اور یہ گروپ کو لگژری الیکٹرک گاڑیوں کی بڑھتی ہوئی بین الاقوامی مانگ کو پورا کرنے کے قابل بنائے گی۔

لوسیڈ کم قیمت اشیاء اور توانائی کی مصنوعات کی دستیابی سے فائدہ اٹھانے کے ساتھ ساتھ مقامی سپلائی چین کی تعمیر کے لیے مرحلہ وار طریقہ اپنانے کی بھی توقع رکھتا ہے۔

کمپنی مینوفیکچرنگ کی سہولت کی تعمیراور اس سے لیس کرنے اور آٹوموٹیو سیکٹر میں کارکنوں کے لیے خصوصی تربیت فراہم کرنے کے لیے قرض حاصل کرنے کی بھی توقع رکھتی ہے۔

گروپ کو توقع ہے کہ یہ سہولت سالانہ 150,000 گاڑیوں کی پیداوار کا ہدف حاصل کرے گی جس پر کام 2022 کی پہلی ششماہی شروع ہوگا۔

مینوفیکچرنگ کے مراحل

پہلے مرحلے میں سہولت کی مصنوعات سعودی مارکیٹ میں طلب کو پورا کرنے تک محدود ہوں گی لیکن "Lucid" دیگر عالمی منڈیوں میں مکمل طور پر تیار گاڑیاں برآمد کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔ خصوصی ماڈلز جو کہ "Lucid" کے صارفین کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے بنائے گئے ہیں انہیں بھی برآمد کیا جائے گا۔

اس سے پہلے کہ سسٹم اور ان ٹیکنالوجیز کو گروپ کی دیگر مینوفیکچرنگ سہولیات میں منتقل کیا جائے ایریزونا میں AMP-1 سہولت کمپنی کا بنیادی مینوفیکچرنگ مرکز رہے گی جب تک کہ امریکا میں تیار کردہ لوسیڈ پروڈکشن سسٹم اور دیگر مینوفیکچرنگ ٹیکنالوجیز پر انحصار کرے گی۔

Lucid نے پہلے ہی AMP-1 کی تعمیر کے دوسرے مرحلے کا آغاز کر دیا ہے جس میں تقریباً 265,000 مربع میٹر تک سہولت کی توسیع کے ساتھ ساتھ ایریزونا میں اپنی سالانہ پیداواری صلاحیت کو 365,000 گاڑیوں تک بڑھانے کا منصوبہ بھی شامل ہے۔

لوسیڈ کا اندازہ ہے کہ ایریزونا اور سعودی عرب میں اس کی دو تنصیبات کی کل پیداواری صلاحیت ہر سال 500,000 گاڑیوں سے تجاوز کر جائے گی جب ہر سہولت اپنی ہدف کی صلاحیت تک پہنچ جائے گی۔

ملازمت کے مواقع

لوسیڈ موٹرز کو توقع ہے کہ جب کمپنی سعودی عرب میں اپنی پیداواری صلاحیت حاصل کرلے گی تو شاہ عبداللہ اکنامک سٹی میں ہزاروں ملازمتیں پیدا ہوں گی اور اس کے زیادہ تر ملازمین سعودی شہری ہوں گے۔

گروپ نے سعودی پبلک انویسٹمنٹ فنڈ کے تعاون سے ایک اندرون خانہ تربیتی پروگرام تیار کیا ہے جو کیلیفورنیا اور ایریزونا میں لوسیڈ سہولیات میں سعودی شہریوں کے لیے تعلیم اور تربیت کے مواقع فراہم کرے گا تاکہ مملکت میں گروپ کے پلانٹ کو چلانے کے لیے ضروری صلاحیتوں کو فروغ دیا جا سکے۔ اس کے علاوہ لوسیڈ کنگ عبداللہ اکنامک سٹی میں خصوصی تربیتی مراکز بنائے گا اور چلائے گا جو افرادی قوت کی مہارتوں کو نکھارنے اور ترقی دینے پر کام کریں گے۔

خیال رہے کہ پبلک انویسٹمنٹ فنڈ نے عالمی سطح پر بہت سے سرکردہ اور اختراعی اداروں جیسا کہ لوسیڈ کمپنی کے ساتھ شراکت داری کو فروغ دینے کے لیے کام کیا ہے جو مستقبل کی قومی معیشت کی تعمیر کے لیے فنڈ کے عزم کی عکاسی کرتا ہے اور مملکت سعودی عرب میں معاشی تبدیلی کے وژن 2030 کے اہداف کے مطابق ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں