ریاض : عالمی دفاعی نمائش میں روس اور یوکرین کے پویلین توجہ کا مرکز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں عالمی دفاعی نمائش جاری ہے۔ مملکت میں پہلی مرتبہ منعقد ہونے والی نمائش کا آغاز 6 مارچ کو ہوا تھا اور یہ 9 مارچ تک جاری رہے گی۔ روس اور یوکرین کے درمیان جنگ کے سبب اس مرتبہ نمائش کو خصوصی توجہ حاصل ہے۔

نمائش کے انتظامات سعودی عرب کی جنرل اتھارٹی فار ملٹری انڈسٹریز (GAMI) نے کیے ہیں۔ نمائش کا مقصد فضائی ، زمینی ، سمندری نظاموں اور سیٹلائٹ اور انفارمیشن سکیورٹی کے درمیان مشترکہ ربط پر توجہ مرکوز کرنا ہے۔

نمائش میں روس اور یوکرین کے درمیان جنگ کے تناظر میں دونوں ملکوں کے پویلینوں کو خاص توجہ حاصل ہو رہی ہے۔ یوکرین کی سرزمین پر جاری یہ جنگ 12 ویں روز میں داخل ہو چکی ہے۔ ادھر ماسکو کو مغربی ممالک کی جانب سے بھاری اقتصادی پابندیوں کا سامنا ہے۔

نمائش میں عسکری ساز و سامان کی روسی کمپنی نے حملہ آور فوجی ہیلی کاپٹروں کے نمونے پیش کیے ہیں۔ ان کے علاوہ طیارہ شکن نظام ، فضائی دفاعی نظام ، ڈرون طیارے اور بھاری توپیں بھی رکھی گئی ہیں۔

ادھر یوکرین کی عسکری ساز و سامان کی کمپنی نے نمائش میں متعدد فوجی ٹینک ، بکتر بند گاڑیاں اور ڈرون شکن نظام پیش کیے ہیں۔

واضح رہے کہ عالمی دفاعی نمائش ایک فعّال پلیٹ فارم ہے جہاں پوری دنیا سے حکومتیں اور عسکری صنعت کی سرخیل کمپنیاں اکٹھا ہوتی ہیں۔

یہ نمائش ہر دو سال میں ایک مرتبہ منعقد کی جائے گی۔ اس کے ذریعے دفاع کے سیکٹر میں اہم ترین عالمی کمپنیوں اور اداروں کی جانب سے جدید ترین ٹکنالوجی اور ایجادات کو منظر عام پر لایا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں