خصوصی افراد کی اداکاری سے تیار کی گئی سعودی فلم کی ریلیز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں تیار کی گئی فلم "ہیروز" آج 10 مارچ کو مملکت کے تمام سینما گھروں اور مشرق وسطیٰ کے منتخب سینما گھروں میں ریلیز کی رہی ہے۔

خالد نامی ایک مغرور پیشہ ور فٹ بال کوچ کی کہانی کے گرد گھومنے والی اس فلم میں ناظرین کو قہقہے بھی ملیں گے۔ مگر ان کے درمیان فلم ایک مثبت پیغام دیا گیا ہے۔ فلم میں اس کے برے رویے کی وجہ سے کمیونٹی سروس میں خصوصی ضروریات کے حامل لوگوں کی ٹیم کو تربیت دینے کے لیے تفویض کیا گیا ہے۔

تاہم وہ جلد ہی اس تجربے سے سیکھتا ہے کہ جیتنا اس کی توجہ کا مرکز نہیں ہونا چاہیے کیونکہ ٹیم کے اراکین اپنی مہربانی، معصومیت اور مزاح کے ذریعے اس پر قابو پانے میں مدد کرتے ہیں جو ان کے آس پاس کے لوگوں تک آسانی سے منتقل ہو جاتا ہے۔

کہانی "ہیروز" خالد کے کردار کی ذاتی ترقی کے پہلو سے بھی تعلق رکھتی ہے اور محبت، ہمدردی اور بااختیار بنانے کے جذبات کے گرد گھومتی ہے۔ وہ کچھ بہت سنجیدہ مسائل کے بارے میں بھی بات کرتی ہے لیکن ہلکے پھلکے، دلکش، مزاحیہ اور آسان فہم طریقے سے اظہار کرتی ہے۔

فلم اسٹار یاسر السقاف نے کہا کہ کبھی کبھی کامیڈی تعلیم کی بہترین شکل پیش کرتی ہے۔

السقاف ٹیم کے کوچ کے طور پر مرکزی کردار ادا کر رہےہیں جب کہ فاطمہ البنوی ان کی منگیتر کا کردار ادا کر رہی ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ اس فلم کو لولا العربیہ اور المہا نے پروڈیوس کیا تھا جنہوں نے فلم ’’بورن اے کنگ‘‘ کو پروڈیوس کیا تھا جس میں مرحوم شاہ فیصل بن عبدالعزیز آل سعود کی کہانی بیان کی گئی تھی۔

پروڈیوسروں نے دی ایڈ سینٹر کے ساتھ شراکت میں کاسٹنگ پر بھی کام کیا۔ یہ جدہ میں قائم ایک غیر منافع بخش تنظیم جو معذور لوگوں کی مدد کے لیے وقف ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں