’سعودی عرب کے پاس دنیا کے بہترین ’ایئروار فیئر سینٹرز‘میں سے ایک ہے‘

سعودی رائل ایئر فورس کے کمانڈر کی العربیہ سے گفتگو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی رائل ایئر فورس کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل ترکی بن بندر بن عبدالعزیز نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہماری فضائیہ کے ساتھ امریکی فضائیہ کا تعلق کئی سال پرانا ہے اور امریکی فضائیہ ہمیشہ ہمارے ساتھ کام کی خواہش رکھتی ہے۔ بالکل اسی طرح جیسے دوسرے ممالک فضائیہ کے تجربے، مہارت اور حقیقی مشق کی وجہ سے اس کے ساتھ بات چیت کرنے کے خواہشمند ہیں۔

لیفٹیننٹ جنرل ترکی نے کہا کہ مشرقی سعودی عرب میں شاہ عبدالعزیز بیس پر واقع ایئر وارفیئر سینٹر دنیا کے سب سے نمایاں فوجی مراکز میں سے ایک ہے کیونکہ اس میں بہت سے ونگز اور سکواڈرن شامل ہیں جو دفاعی سطح کو بڑھانے کے لیے درکار تربیت فراہم کرتے ہیں۔

اس کے علاوہ تمام فضائی اور تکنیکی عملے کے ساتھ ساتھ انٹیلی جنس عملے کی جنگی صلاحیت اور باقی دیگر خطوں میں تربیت کے مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری، مدد، رہ نمائی اور اس پر توجہ مرکوز کی گئی ہے۔

لیفٹیننٹ جنرل ترکی نے اس بات پر زور دیا کہ ریڈ فلیگ مشق 2022 میں رائل سعودی فضائیہ کی موجودگی نہ صرف شرکت کے لیے ہے بلکہ یہ مشق میں مہمات اور کاموں کی قیادت کرتی ہے۔ کسی بھی فضائیہ کے لیے اس میں حصہ لینا آسان نہیں ہے۔ کسی بھی فضائیہ پر لاگو ہونے والے اعلیٰ معیارات کی وجہ سے ایسی مشق میں حصہ لینا چاہیں گے۔

انہوں نے یہ بات نیلس ایئر فورس بیس کے دورے کے دوران کہی جہاں انہوں نے اپنے بیس کے کمانڈر، جنرل کیسی کوئیننگھم اور دیگر فوجی فضائی رہنماؤں سے ملاقات کی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں