طبی انخلا کے بعد کویت میں زخمی سعودی شہری کا کامیاب آپریشن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

کویت میں گولی لگنے سے زخمی ہونے والے سعودی عرب کے ایک شہری ماجد الخالدل کو بدھ کے روز کویت سے طبی انخلاء کے ذریعے علاج کے لیے ریاض کے کنگ سعود میڈیکل سٹی منتقل کرنے کے بعد ان سے گولی نکالنے کا آپریشن کیا گیا۔

الخالدی کے اہل خانہ نے اسے طبی انخلاء کے ذریعہ مملکت کے ایک اسپتال میں منتقل کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ ان کے بھائی عبداللہ نے "العربیہ نیٹ" کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ گذشتہ روز آپریشن کیا گیا اور ماجد کے جسم سے گولی نکال دی گئی، تاہم ان کا بھائی اب بھی کومے میں ہے۔ انہوں نے بھائی کی صحت یابی اوراپنے خاندان کے پاس واپس آنے کے لیے دعا کی درخواست ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ میرے پاس زخمی بھائی کو ملک میں واپس لانے کے لیے خادم الحرمین الشریفین کی طرف سے کیے گئے اقدامات کے لیے شکریہ کے الفاظ نہیں ہیں۔

ماجد الخالدی کا کویت سے طبی انخلا خادم الحرمین الشریفین کی حکومت کی طرف سے مدد، حفاظت اوراپنے شہریوں کی صحت کے حوالے سے ان کی دلچسپی اور توجہ کو ظاہر کرتی ہے۔

الخالدی کویت کے ایک شہری کے ہاتھوں زخمی ہونے کے بعد انتہائی نگہداشت کے یونٹ میں اسپتال میں داخل تھے۔ ان پر گولی چلائے جانے کے باعث ان کی گاڑی روشنی کے ایک کھمبے سے ٹکرا گئی تھی۔

تحقیقات سے معلوم ہوا کہ گولی مارنے والا کویت کے علاقے جہرہ کا رہنے والا تھا اور منشیات کے زیر اثر تھا۔

کویتی وزارت داخلہ کے ذرائع نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ مجرم منشیات کے زیر اثر تھا اور وہ اپنے فریب میں زندگی گزار رہا تھا۔ اس کا خیال تھا کہ مقتول کے ساتھ مجرم کی بہن بھی تھی، حالانکہ مقتول اپنی بیوی کو ساتھ لے کر جا رہا تھا۔ حادثے کے وقت مجرم جب گھر واپس آیا تو اس کی بہن نے اسے نشے میں دھت پایا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں