خطے کو متعدد خطرات کا سامنا ہے : سعودی وزیر توانائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کے وزیر توانائی شہزادہ عبدالعزیز بن سلمان کا کہنا ہے کہ گذشتہ ہفتے مملکت کی جانب سے جاری بیان میں واضح کر دیا گیا کہ وہ توانائی کے شعبے میں ترسیل کی سیکورٹی کی ذمے داری قبول نہیں کرے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ خطے کو متعدد خطرات درپیش ہیں۔

آج منگل کے روز جاری بیان میں سعودی وزیر نے باور کرایا کہ "ہم توانائی کی سیکورٹی کو یقینی بنانے کے لیے اجتماعی شکل میں کام کر رہے ہیں۔ خلیجی ممالک نے اس معاملے میں مطلوبہ تقاضے پورے کر دیے ہیں ، اب دوسروں کو بھی اپنے وعدے پورے کرنا چاہئیں"۔

شہزادہ عبدالعزیز کے مطابق اس میں کوئی شک نہیں کہ توانائی کی ترسیل کی سیکورٹی متاثر ہونے کی صورت میں معیشت پر اثر پڑے گا اور یہ چیز عالمی معیشت پر بھی اثر انداز ہو گی۔

سعودی وزیر نے واضح کیا کہ روس روزانہ تقریبا 1 کروڑ بیرل تیل پیدا کر رہا ہے ، یہ عالمی استعمال کا تقریبا 10% ہے اور یہ ایک بڑا حصہ ہے۔

سعودی وزیر کے مطابق اگر "اوپیک پلس" گروپ نہ ہوتا تو موجودہ حالات میں توانائی کے سیکٹر میں عالمی منڈی کا استحکام اور توازن برقرار نہ رہ پاتا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں