اسرائیل میں فلسطینی حملہ آور کی فائرنگ سے پانچ مہلوکین میں دویوکرینی بھی شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی پولیس نے بدھ کے روز بتایا ہے کہ تل ابیب کے نواح میں واقع علاقے بنی براک میں فلسطینی بندوق بردار کی فائرنگ سے ہلاک ہونے والے پانچ افراد میں دو یوکرینی شہری تھے۔

پولیس نے ایک بیان میں کہا ہے کہ منگل کوحملے میں ہلاک ہونے والوں کی شناخت کی گئی ہے۔ان میں ایک غیرملکی یوکرینی کی عمر23 سال تھی اور یوکرین سے تعلق رکھنے والا دوسرے مہلوک کی عمر32 سال تھی۔

پولیس کے مطابق مغربی کنارے کے گاؤں یاباد سے تعلق رکھنے والی فلسطینی دیا ارمشاہ نے بنی براک کے مرکزی حصے میں راہگیروں اور ایک کار پرفائرنگ کی تھی۔اس کے نتیجے میں ایک دکان کے باہر بیٹھے ہوئے دونوں یوکرینی باشندے ہلاک ہو گئے تھے۔حملہ آور نے اس سے قبل قریب ہی دو اسرائیلیوں کو ہلاک کردیا تھا۔

پولیس نے بتایا کہ ارمشاہ نے مارے جانے سے قبل جائے وقوعہ پر پہنچنے والے ایک پولیس افسر کوبھی گولی مار کر ہلاک کردیا تھا۔

اسرائیلی وزارت داخلہ کے ترجمان نے بتایا کہ صہیونی ریاست میں قریباً15 ہزار یوکرینی شہری آباد ہیں لیکن 24 فروری کو روس کے یوکرین پر حملے کے بعد سے قریباً 20 ہزاریوکرینی پناہ گزین اسرائیل میں آچکے ہیں۔

اطلاعات سے پتاچلتا ہے کہ منگل کے حملے میں ہلاک ہونے والے دونوں افراد کچھ عرصے سے اسرائیل میں تھے اور یوکرین میں جنگ سے پہلے یہاں آئے تھے اور وہ پناہ گزین نہیں تھے۔منگل کو فلسطینی کی یہودیوں پر فائرنگ گذشتہ ہفتے کے دوران میں اسرائیل میں بندوق یا چاقو سے تیسرامہلک حملہ تھا۔

گذشتہ ہفتہ کے روزاسرائیل کے ایک عرب شہری نے جنوبی شہر بیرشیبا میں چاقو زنی اور کارحملے میں چارافراد کو ہلاک کردیا تھا، اس کے بعدایک راہ گیر نے اسے گولی مار کرہلاک کر دیا تھا۔اسرائیلی حکام نے بتایا کہ وہ داعش کا ہمدرد تھا۔

گذشتہ اتوار کے روز جنوبی اسرائیل میں اسرائیلی اورعرب وزراء خارجہ کے اجلاس کے موقع پرایک شمالی قصبے کے رہائشی عرب حملہ آور نے دو پولیس افسروں کو گولی مارکر ہلاک کردیا تھا۔اس کے ردعمل میں دوسرے افسروں نے اسے بھی گولی ماردی تھی۔تشدد کا یہ واقعہ تل ابیب کے شمال میں 50 کلومیٹر(30 میل) کے فاصلے پرواقع شہر الخضیرہ میں پیش آیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں