ایرانی پاسداران انقلاب میں خدمت کی پاداش، کینیڈین گلوکار کا امریکا میں داخلہ منع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایرانی نژاد کینیڈین گلوکار علی رضا قربانی کو ایرانی پاسداران انقلاب میں لازمی عسکری خدمت کی انجام دہی کے سبب امریکا میں داخل ہونے سے روک دیا گیا۔ یہ واقعہ گذشتہ ہفتے پیش آیا جب علی ایک موسیقی کی محفل میں شرکت کے لیے پہنچے تھے۔

تفصیلات کے مطابق بدھ کو نوروز کے تہوار کے موقع پر لاس اینجلس میں واقع ایک غیر منافع بخش ادارے "ثقافت" نے ایک پروگرام کا انتظام کیا تھا۔ ادارے کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر علی رضا اردکانی کے مطابق معروف گلوکار طیارے میں سوار تھے۔ تاہم امریکی امیگریشن کے متعدد ذمے داران طیارے میں آئے اور علی رضا کو لے کر چلے گئے۔ یہ بات فارسی ذرائع ابلاغ نے امریکی اخبار لوس اینجلس ٹائمز کے حوالے سے بتائی۔

اردکانی کے مطابق علی رضا سے تقریبا 4 گھنٹے پوچھ گچھ جاری رہی۔ اس کے بعد انہیں بتایا گیا کہ ان کا ویزا منسوخ کر دیا گیا ہے اور وہ امریکا میں داخل ہونے کے مجاز نہیں۔

اردکانی کا کہنا ہے کہ علی رضا کی عارضی حراست اور ان کو امریکا کے سفر سے محروم کرنے کی ممکنہ وجہ کئی دہائیوں قبل ایرانی پاسداران انقلاب میں عسکری خدمت کی انجام دہی ہو سکتی ہے۔

ایرانی شہریوں بالخصوص ایرانی پاسداران انقلاب میں لازمی عسکری خدمت انجام دینے والوں کو امریکی سرزمین پر داخل ہونے میں سخت اور کڑے اقدامات کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں