لبنان کا سفارتی بائیکاٹ ختم، سعودی عرب کا اپنا سفیر جلد بیروت بھیجنے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی وزارت خارجہ نے لبنان میں اپنے سفیر دوبارہ بھیجنے کا اعلان کیا ہے۔

بیان میں کہا ہے کہ وزارت خارجہ نے یہ فیصلہ لبنان میں اعتدال پسند قومی سیاسی قوتوں کی اپیلوں کے جواب اور لبنانی وزیر اعظم کی جانب سے سعودی عرب، دیگرتمام خلیجی ممالک کے ساتھ تعاون کو فروغ دینے اور مملکت اور دوسرے عرب ملکوں کے خلاف مکروہ سیاسی اور عسکری سرگرمیوں کو روکنے کی یقین دہانی کے بعد کیا ہے۔ اس یقین دہانی کے بعد اب جلد ہی خادم حرمین شریفین کا سفیر برادر ملک جمہوریہ لبنان میں واپس آ جائے گا۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ مملکت جمہوریہ لبنان کی عرب دنیا کے ساتھ گہرے تعلقات کی واپسی کی اہمیت پر زور دیتی ہے۔ سعودی عرب نے ہمیشہ لبنانی قوم کی ترقی، خوشحالی اور ملک کے استحکام کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

سعودی عرب اور لبنان کے درمیان تعلقات حال ہی میں خراب ہوئے تھے اور مملکت نے گذشتہ اکتوبر میں بیروت سے اپنے سفیر کو واپس بلا لیا تھا اور لبنانی سفیر کو ریاض چھوڑنے کو کہا تھا۔

ادھر کویت نے بھی لبنان میں اپنے سفیر کی واپسی کا اعلان کیا ہے۔

جمعرات کے روز لبنان میں کویت کے سفیرعبد العال القناعی نے لبنانی وزیر اعظم نجیب میقاتی کو کویتی سفیر اختتام ہفتہ سے قبل ہی بیروت جائے گا۔

لبنانی کابینہ نے میقاتی کے حوالے سےکہا ہے کہ جو چیز لبنان اور کویت کو ایک ساتھ لاتی ہے وہ قریبی برادرانہ تعلقات کی تاریخ ہے جو وقت گذرنے کے ساتھ ساتھ مضبوط تر ہوتے جا رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں