ایلون مسک سے رابطے کے بعد ’ٹویٹر‘ کے بارے میں شہزادہ ولید بن طلال نے کیا کہا؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

کنگڈم ہولڈنگ کمپنی کے سربراہ شہزادہ الولید بن طلال نے ایلون مسک کی مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ’ٹویٹر‘ کی صلاحیت کو آگے بڑھانے اور اسے زیادہ سے زیادہ بہتر کرنے میں مدد کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ مُجھے مسک پر مکمل اعتماد ہے۔ انہوں نے امریکی ارب پتی ایلون مسک کو اپنا "نیا دوست" قرار دیا۔

شہزادہ الولید نے اپنے ’ٹویٹر‘ اکاؤنٹ پر ایک ٹویٹ میں کہا کہ وہ ٹویٹر میں اپنے 1.9 ارب ڈالر کے حصص رکھیں گے اور ٹویٹر کے "پرجوش" سفر میں شامل ہوں گے۔

کنگڈم ہولڈنگ کمپنی کے سربراہ شہزادہ الولید بن طلال نے اپنی کمپنی کو ٹویٹر کے بڑے مالکان میں سے ایک قرار دیتے ہوئے ایلون مسک کی پیشکش کو مسترد کر دیا تھا اور اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر گذشتہ ایک ٹویٹ میں کہا تھا کہ یہ پیشکش ان کے لیےمناسب نہیں تھی۔

مسک نے الولید بن طلال سے ان کی براہ راست اور بالواسطہ ملکیت کی حد کے بارے میں پوچھ کر ٹویٹ کا جواب دیا۔

بلومبرگ نے کہا کہ اس کے اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ 2015 میں ولید اور ان کی کمپنی کے پاس 5.1 فیصد ٹوئٹر کی ملکیت تھی، جب کہ اس وقت ملکیت کا تخمینہ 4.4 فیصد ہے۔

ایلون مسک دنیا کے سب سے امیر آدمی قرار دیتے جاتے ہیں۔ انہوں نے 25 اپریل کو ٹویٹر کو حاصل کرنے کے لیے ایک معاہدہ کیا۔ ٹویٹر کی خریداری کی یہ ڈیل 44 ارب ڈالر میں ہوئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں