.

سعودی عرب: عسیر کے ساحل کے طلسمی مناظر کیمرے کی نظرمیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تصویر کی زبان میں فوٹوگرافرعبداللہ العیدی کی طرف سے منتقل کی گئی فوٹیج کی پیشہ ورانہ مہارت کے ذریعے عسیرکے علاقے کے ساحل کے قدرتی حسن کی جھلک دیکھی جا سکتی ہے۔

اس تناظر میں انہوں نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کے ساتھ ایک انٹرویو میں وضاحت کی کہ یہ تصویر دنیا کے لیے سب سے بڑا اور اہم پیغام ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اس جگہ کے مناظر خود اپنی خوبصورتی بیان کرتے ہیں اور ناظرین کو پہلی نظرمیں اپنی جانب کھینچ لیتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ مجھے اپنے انداز میں فوٹو گرافی کا شوق ہے۔میں ہر جگہ قدرتی خوبصورتی کے پیچھے جاتا ہوں۔ اسے ایک خاص زاویے سے مانیٹر کرتا ہوں۔ اسے اپنے روشنی کے نقطہ نظر سے دیکھتا ہو اور اسے دنیا تک پہنچاتا ہوں۔

عیدی کا کہنا ہے کہ القحمہ، الحریضہ، کدنمل اور دیگر مقامات اور جزیروں کے ساحلوں کی خوبصورت ترین تصاویر حاصل کیں۔ یہ علاقے عسیر گورنری کے مرکزی مقامات میں سے ہیں۔ یہ خوبصورت مقامات ابھا کے مغرب میں 180 کلومیٹر کے فاصلے پر ہیں جو مینگروو کے درختوں اور پرندوں کی وجہ سے مشہور ہے۔

فوٹو گرافی کا شوق

عبداللہ العیدی نے فوٹو گرافی کے شوق کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ اُنہیں بچپن سے ہی اس کا شوق تھا لیکن انہوں نے 2008 میں اس شوق کا باقاعدہ آغاز کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ میں نے فوٹو گرافی کے فن کو مطالعے اور مشق کے ذریعے پختہ کیا۔ اس مشق اور تجربے کا نتیجہ ہے کہ انہیں فوٹو گرافی کے علاقائی اور بین الاقوامی مقابلوں میں ایوارڈ مل چکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سعودی عرب کی فوٹو گرافی کرکے مملکت کے قابل دید قدرتی مناظر کو عوام الناس تک لانے کی کوشش کرتا ہوں۔ وہ سعودی عرب کی فوٹو گرافی کرتے ہوئے اب تک مملکت کے کئی اہم ترین سیاحتی مقامات کی تشہیر کرچکے ہیں اور لندن، شگنھائی اور سڈنی میں فوٹو گرافی کے بین الاقوامی مقابلوں شرکت کرچکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں