لبنان میں پارلیمانی انتخابات، حزب اللہ کے اہم اتحادی الیکشن ہار گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لبنان کے وزیر داخلہ بسام مولوی نے ایک پریس کانفرنس کے دوران 15 میں سے چار انتخابی اضلاع کے سرکاری نتائج کا اعلان کیا ہے۔

پہلے جنوبی ضلع کے نتائج سے ظاہر ہوتا ہے کہ حزب اللہ اور اس کے اتحادیوں نے کوئی نشست حاصل نہیں کی۔ دریں اثناء پارلیمان کے حزب اللہ کے حمایت یافتہ ڈپٹی سپیکر ایلی فرزلی پارلیمانی انتخابات میں اپنی نشست ہار گئے۔

لبنانی وزیر داخلہ نے مزید کہا کہ نتائج یکے بعد دیگرے ظاہر ہوں گے۔ حتمی نتائج کی تصدیق کے بعد باضابطہ اعلان کیا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ ووٹروں کا ٹرن آؤٹ اچھا رہا ہے اور پچھلے پارلیمانی انتخابات کے مقابلے کم نہیں ہے۔

لبنان میں پارلیمانی انتخابات میں ووٹوں کی گنتی کا عمل آج پیر کو جاری رہےگا اور مجموعی طور پر 128 پارلیمانی حلقوں کے نتائج کو حتمی شکل دی جا رہی ہے۔

ابتدائی نتائج سے ظاہر ہوتا ہے کہ ’لبنانی فورسز پارٹی‘نے بیس نشستیں جیتی ہیں۔ یہ لبنان میں عیسائی برادری کی بڑی سیاسی جماعت ہے۔ اس کے علاوہ فری پیٹریاٹک موومنٹ نے 16 نشستیں حاصل کی ہیں۔

ابتدائی نتائج نے یہ بھی اشارہ کیا کہ کم از کم پانچ دیگر آزاد امیدوار جنہوں نے اصلاحاتی پروگرام کی بنیاد پر انتخابی مہم چلائی تھی جیت گئے۔

آج کے ابتدائی نتائج سے ظاہر ہوتا ہے کہ حزب اللہ اور اس کے اتحادیوں کو انتخابات میں بہ ظاہر کچھ نقصان ہوا کیونکہ ان کے مخالفین میں سے کچھ نے نشستیں حاصل کیں اور ان کے کچھ روایتی ساتھی قانون ساز کونسل کے انتخابات میں کامیابی حاصل نہیں کر سکے۔

نئی پارلیمنٹ کو اسپیکر کا انتخاب کرنا ہوگا۔ لبنان میں سنہ 1992 سے نبیہ بری پارلیمنٹ کے اسپکر چلے آ رہے ہیں۔ پارلیمنٹ کے انتخاب کے بعد ایوان وزیراعظم کا چناؤ کرے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں