بہرے پن کا شکار سعودی یوٹیوبر اپنے جیسے لوگوں کا یوٹیوب پر استاد بن گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اشاروں کی زبان میں نوجوان سعودی شہری عبداللہ الغامدی نے ایک ایسا انسانی مشن شروع کیا جس کی طرف کم لوگوں کی توجہ جاتی ہے۔انہوں نے گونگے بہرے لوگوں کو یوٹیوب چینل پرمختلف سرگرمیوں کے طریقے سکھانے کا رضا کارانہ مشن شروع کیا ہے۔ وہ یوٹیوب پرگونگے یا بہرے لوگوں کو اشاروں کی زبان میں نماز ادا کرنے، اسپتالوں کے مختلف سیکشنز، فاسفوڈ حاصل کرنے کے طریقے، کرنسیوں کی شناخت، رنگ اور حروف تہجی کے بارے میں معلومات فراہم کیں۔

الغامدی نے یہ معلومات ایک یوٹیوب چینل کے ذریعے فراہم کرنے کا فیصلہ کیا جو انہوں نے اسی مقصد کے لیے کھولا تھا اور وہ یہ معلومات امریکا سے اپنے چینل کے ذریعے نشر کرتے ہیں۔ وہ اس چینل کے ذریعے اب تک بہت سے مفید کلپس پیش کیے ہیں۔

عبداللہ الغامدی کی والدہ نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو بتایا کہ ہمیں لگا کہ عبداللہ کو سماعت میں دشواری کا سامنا ہےتو ہم نے اس کے ضروری ٹیسٹ کروائے تاکہ یہ معلوم ہو سکے کہ وہ سماعت کی کمزوری کا شکار ہے۔ آخر کار اسے آلہ سماعت مہیا کیا گیا جس کی مدد سے وہ آسانی کے ساتھ دوسرے کی بات سن سکتا تھا۔

انہوں نے بتایا کہ عبداللہ کو کوکلیئر امپلانٹ کی ضرورت تھی کیونکہ یہ ایک بہتر آپشن تھا، اور آپریشن مکمل ہو گیا اور پھر علاج کا مرحلہ اور مواصلاتی سیشن نیشنل گارڈ کے طبی عملے کے ذریعے شروع ہوئے اور طبی ماہرین کی ایک ٹیم نے علاج اور دیکھ بھال کی نگرانی کی۔

انہوں نے مزید کہا کہ کوکلیئر امپلانٹ نے اسے گلی یا اسکول میں اپنے قریب کی آواز میں فرق کرنے میں مدد کی، تلفظ کے ساتھ ساتھ سننے کی مسلسل تربیت ملی اور یوں عبداللہ وہ بہت سی آوازوں میں فرق کرنے کے قابل ہوگیا۔

عبداللہ غامدی کی ماں کا کہنا تھا کہ بہرے پن میں بچے تعلیم مشکل تھی، کیونکہ ہر روز لسانی علم کے حصول کے لیے اسے دوہری کوشش کرنے کی ضرورت ہوتی تھی۔ اس لیے تعطیلات کا فائدہ اٹھانے کے لیے ماہرین تقریر کے ساتھ بات چیت کرنے اور کسی ایسے پروگرام میں شامل ہونے کا منصوبہ بنایا گیا تھا جو اسے تعلیمی اور علمی معلومات فراہم کرتے ہوں۔

انہوں نےمزید کہا کہ بہرے پن کے شکار عبداللہ کی دماغی صحت پر بھی نظر رکھی گئی۔ تاکہ اس میں خود اعتمادی پیدا ہو۔ اسے علم کے ذرائع فراہم کیے گئے۔ کتابیں، کہانیاں اور سی ڈیز کے ذریعے اس کی زبان کے نکھار کی کوشش کی گئی۔

اشاروں کی زبان کے حوالے سے اس نے عربی اور انگریزی اشاروں کی زبان میں مہارت حاصل کی ہے۔ ساتھیوں کے ساتھ اشاروں کی زبان کا ترجمہ کرنے کے ساتھ ساتھ بہروں کے سوالات کے جوابات دینے، سوشل میڈیا کے ذریعے درست معلومات فراہم کرنے کا تجربہ بھی رکھتا ہے۔

اس نے بہروں کو اپنی خدمات فراہم کرنے کا فیصلہ کیا تاکہ وہ ان کو فائدہ پہنچانے اور ان کی صلاحیتوں کو نکھارنے کا سبب بنیں۔ چینل سے نہ صرف بہروں کو فائدہ ہوتا ہے بلکہ سننے والا بھی اشاروں کی زبان سیکھ سکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں