روس کی جانب سے شام میں چھوڑے گئے خلا کو ایران پُر کرے گا: شاہ عبداللہ الثانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اردن کے فرماں روا شاہ عبداللہ الثانی نے باور کرایا ہے کہ جنوبی شام میں روس کی موجودگی پُر سکون حالات کا ذریعہ تھی۔ انہوں نے واضح کیا کہ روس کی جانب سے وہاں چھوڑے جانے والے خلا کو ایران اور اس کے ایجنٹ پُر کریں گے۔

کل بدھ کے روز ہوفر انسٹی ٹیوٹ کو دیے گئے ایک انٹرویو میں شاہ عبداللہ نے کہا کہ ان کے ملک کو شام کے ساتھ سرحد پر ممکنہ جارحیت کا سامنا ہے۔ یہ بات اردن کی سرکاری خبر رساں ایجنسی پیٹرا نے بتائی۔

انہوں نے واضح کیا کہ خطے کے مسائل کے حل تلاش کرنے کے لیے عرب رابطہ کاری جاری ہے تا کہ امریکا پر انحصار کے بغیر ان مسائل کو حل کیا جا سکے۔

اردن کے فرماں روا کا یہ بیان ان رپورٹوں کے بعد سامنے آیا ہے جن میں کہا گیا ہے کہ ایران، روس کی یوکرین میں فوجی آپریشن میں مشغولیت کا فائدہ اٹھا کر شام کے وسطی اور دیگر علاقوں میں اپنا وجود وسیع کر سکتا ہے۔

شام کے وسط میں روس کے حلیف مسلح گروپوں کے انخلاء کے بعد ایرانی ملیشیائیں وہاں پھیل گئی ہیں۔ گذشتہ ماہ پانچ اپریل کو ایرانی پاسداران انقلاب کی جانب سے حمص کے مشرق میں فوجی گوداموں میں بھاری کمک پہنچی تھی۔ یہ بات مقامی ذرائع نے عربی روزنامے "الشرق الاوسط" کو بتائی۔

ذرائع کے مطابق روسی افواج نے انخلا کے بعد حمص کے مشرق میں واقع تدمر فوجی ہوائی اڈے کا رخ کیا۔

میڈیا رپورٹوں میں کہا جا رہا ہے کہ یوکرین میں روس کی مشغولیت نے ماسکو کے سامنے اس کے سوا کوئی راستہ نہ چھوڑا کہ وہ شامی افواج اور ایرانی ملیشیاؤں کے لیے میدان کھلا چھوڑ دے۔

مقبول خبریں اہم خبریں