عراق میں خونی بخار سے18 اموات، مریضوں کی تعداد 96 ہو گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عراقی وزارت صحت نے ہیمرجک بخار کے کیسوں میں اضافے کا اعلان کرتے ہوئے صورت حال کو "سنگین" قرار دیا۔

ہفتہ کو وزارت صحت کے ترجمان سیف البدرنے ایک بیان میں کہا کہ "عراق میں ہیمرجک [خونی] بخار کے انفیکشن میں خطرناک اضافہ ہو رہا ہے۔محکمہ صحت کا کہنا ہے کہ اس بیماری کے کیسز کی تعداد بڑھ کر 96 ہو گئی ہے۔

سیف البدر نے مزید کہا کہ ملک کے تمام صوبوں میں اب تک ہیمرجک بخار سے ہونے والی اموات کی تعداد 18 تک پہنچ گئی ہے۔ ممکن ہے کہ مشتبہ کیسز کی موجودگی کی وجہ سے انفیکشن کی تعداد میں ایک اور اضافہ ہو۔

دوسری طرف ملک کے تمام گورنریوں نے "ہیموریجک فیور" کا مقابلہ کرنے کے لیے احتیاطی اور اقدامات کیے ہیں۔

روداؤ میڈیا نیٹ ورک کے مطابق ذی قار گورنری کے ایک عہدیدار حیدر حنتوش نے بتایا کہ گورنری میں ہیمرجک بخار کے دو نئے کیسز ریکارڈ کیے گئے جس سے اس بیماری کے پھیلنے کے بعد سے متاثرہ افراد کی تعداد 42 ہو گئی ہے۔

ذی قار گورنری عراق میں ہیمرجک بخار کے متاثرین کا گڑھ بن گئی ہےجہاں مقامی حکومت نے نئے انفیکشن سے بچنے کے لیے سخت اقدامات کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں