’سال 2021 میں مملکت کے مالیاتی ٹکنالوجی کے شعبے میں 200 فیصد ترقی‘

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے وزیر مواصلات عبداللہ السواحا نے کہا ہے کہ مملکت میں ٹیکنالوجی کے میدان میں زبردست ترقی کے بعد یہ شعبہ ایک کھرب ڈالر کی مارکیٹ بن چکا ہے۔ اس حجم کے ساتھ یہ ٹیکنالوجی اور ڈیجیٹل مارکیٹوں میں ایک بڑی منڈی بن چکی ہے۔

ڈیوس میں ورلڈ اکنامک فورم کے موقعے پر منعقدہ ایک سیمنار سے خطاب میں السواحا نے کہا کہ ہماری خواہش ہے کہ ہم جو کچھ بھی کرتے ہیں اس میں ہمیشہ ٹاپ ٹین میں شامل ہوں۔ ہنر کی بدولت ہم دنیا میں نویں نمبر پر ہیں۔ ٹیکنالوجی کے تمام پہلوؤں میں آگے بڑھ سکتے ہیں۔

سعودی وزیر نے کہا کہ پچھلے سال وینچر کیپیٹل کی سرمایہ کاری کی دوگنا ہو گئی جس کے بعد سعودی ٹیکنالوجی سٹارٹ اپ میں سرمایہ کاری کی قدر 2019 اور 2020 کی مشترکہ مالیت سے بھی بڑھ گئی ہے۔

السواحا نے ٹیکنالوجی کے شعبوں میں ہونے والی زبردست ترقی کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ اس شعبے میں گذشتہ سال 200 فیصد اضافہ ہوا۔

اس سوال کے جواب میں کہ مملکت کس طرح اس بات کو یقینی بناتی ہے کہ مملکت میں ٹیکنالوجی کے شعبے میں کوئی تقسیم نہ ہو۔ انہوں نے کہا: “ماضی کے حوالے سے میں آپ کو ایک متاثر کن کہانی بتاتا ہوں۔ یہ عظیم اصلاحات کی کہانی ہے۔ یہ کہانی اکیسویں صدی میں شروع ہوئی اس دوران سعودی عرب نے ترقی اور پائیداری کو بہتر بنانے کے لیے بھرپور طریقے سے کام شروع کیا۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ سعودی ڈیجیٹل شعبوں میں ترقی کی منصفانہ انداز میں آگے بڑھ رہی ہے۔

السواحا نے مزید کہا کہ ٹیکنالوجی کے شعبے میں خواتین کو با اختیار بنانے کا ہدف 7 فی صد سے بڑھ کر 29 فی صد تک پہنچ گیا جو کہ ہمارے لیے فخر کی بات ہے۔

سعودی وزیر مواصلات نے حاضرین کو آرامکو اور ایس اے بی آئی سی کے ہیڈ کوارٹرز کا دورہ کرنے کی دعوت دی، جن میں نقل وحمل، پیداوار اور ریفائری دونوں شعبوں میں ٹیکنالوجی پر انحصار کی بدولت کاربن کی سب سے کم شرح کا اخراج ہو رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں